نئے بجٹ کے بعد یہ اشیاء مہنگی ہونگی

whysojapan_Don_Quijote_02 اسلام آباد : عوام اپنی جيبيں خالي کرنے کيلئے تیار ہوجائيں، چار ہزار آٹھ سو ارب سے زيادہ کا وفاقي بجٹ آج پيش کيا جائے گا، جس میں  سیکڑوں درآمدی اشیاء پر کسٹم اور ریگولیٹری ڈیوٹی بڑھے گي، جس میں کاسمیٹک، چاکلیٹ، سگریٹ، مشروبات، الیکٹرونکس اور دیگر سامان شامل ہے۔

supermarket_1 ذیل میں ایسی ہی چیزوں کی فہرست دی جا رہی ہے، جو 2017 کے بجٹ آںے کے بعد مہنگی ہو کر عوامی پہنچ سے دور ہو جائیں گی۔ سال  18-2017 کی ٹیکس تجاویز کے مطابق مہنگی ہونے والی اشیاء میں 400 سے زیادہ درآمدی اشیاء مہنگی ہونگی۔

536303414

لگژری درآمدی اشیاء پر ڈیوٹی میں 5 فیصد اضافے کا امکان ہے

میک اپ کا سامان، سرخی پاوڈر، لوشن مہنگا ہونے کا امکان ہے، پرفیوم، اسکن کریم، فیس کریم اور فیس باوڈر بھی شامل ہیں۔

چاکلیٹ، شہد، پنیر، دہی، فروزن آم، شہد بھی مہنگا ہونے کا امکان ہے۔

منرل واٹر، جوسز، آٹو پارٹس، الیکٹرانک بھی مہنگی ہونے والی مصنوعات میں شامل ہیں۔

نئے بجٹ میں ڈبوں میں بند زیادہ تر مصنوعات مہنگی ہو جائیں گی۔

الیکٹرونکس سامان جیسے فریج، ٹی وی، اے سی، ایئر کنڈیشن، یو پی ایس، پنکھے، فرنیچر، واٹر ڈسپنسر، مائیکرو ویو اوون بھی مہنگا ہوگا۔

الیکٹرک ٹیبل، ڈیسک، ڈش رسیور، الماریاں اور دیگر آلات بھی مہنگے ہونے والی اشیاء میں شامل ہیں۔

گاڑیوں کے پارٹس بھی مہنگے ہونگے۔

جانوروں کا کھانا بھی مہنگائی کی زد میں آئے گا۔ سماء

Sales Tax

COSMETIC

budget 2017

regulatory

Tabool ads will show in this div