وزیراعلیٰ سندھ کا سرکاری دفاتر میں چھٹی کا اعلان

ویب ایڈیٹر:

کراچی:وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ کا کہنا ہے کہ کراچی میں ہونے والی اموات پرسیاست نہ کی جائے۔گرمی کے باعث اموات پر ہمیں بھی افسوس ہے۔ انہوں نے کہا کہ قحط سب کے دور میں آتا رہا لیکن کسی کا نام لیکر معاملے کا متنازع نہیں بنانا چاہتا۔ دیگر جماعتوں کو مشورہ بھی دے ڈالا کہ لاشوں پر سیاست کے بجائے معاملے پر دکھ کا اظہار کریں ۔

وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ کہیں نہ کہیں تو غفلت ہوئی ہے لیکن بجلی کے معاملات وفاقی حکومت سنبھال رہی ہے۔ ہم کراچی میں لوڈ شیڈنگ کے معاملے پر متعلقہ حکام سے رابطے میں ہیں، قدرتی آفات کے باعث ہونے والی اموات پر سیاست نہ کی جائے۔

وزیراعلیٰ سندھ نےجوش خطابت میں کراچی میں قہر برساتی گرمی کے پیش نظر سرکاری ملازمین کو چھٹی دینے کے اعلان کے ساتھ ساتھ موسم گرما کی تعطیلات کے باعث پہلے سے بند اسکولوں کو پھر بند کرنے کا اعلان بھی کر ڈالا۔

سندھ اسمبلی کے اجلاس سے خطاب کے دوران وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ کراچی میں گرمی سے ہلاکتوں کے معاملے پر کل اجلاس میں بتاؤں گا کہ سندھ کی عوام صوبائی حکومت کی کارکردگی سے کس حد تک مطمئن ہے۔ کراچی کی تاریخ میں پہلی بار ایسی ناگہانی اموات دیکھنے میں آئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ آج بھی مختلف علاقوں سے 15 افراد کی ہلاکت کی اطلاع ملی۔

وزیراعلیٰ سندھ کا مزید کہنا تھا کہ بجلی بحران کے خاتمے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں، دکانیں رات 9 بجے بند کرنے کا فیصلہ اسی سلسلے کی کڑی ہے، صورتحال کے پیش نظر اگر کچھ عرصہ عوام نے رات میں خریداری نہ کی تو بھی خیر ہے۔ انہوں نے کہا کہ سندھ بھر کے کمشنرز کو فوری ایمرجنسی سینٹرز کے قیام کی ہدایت کر دی ہے، ڈیزاسٹر منیجمنٹ کا رابطہ نمبر بھی اخبارات میں شائع کرائیں گے تا کہ عوام سہولیات کیلئے رابطہ کر سکیں۔

وڈے سائیں کے خطاب کے دوران اپوزیشن ارکان اسمبلی کی نعرے بازی پر اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی نے ارکان سے کہا کہ خاموش ہو جائیں۔ وزیراعلیٰ صاحب بات کر رہے ہیں جس پر سائیں نے اپوزیشن کی نعرے بازی پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ یہ آداب اسمبلی ہیں جس کا مظاہرہ کیا جا رہا ہے، اپوزیشن ارکان شاید ایوان میں پہلی بار آئے ہیں۔ سماء

death

sind

assembly session

Tabool ads will show in this div