کراچی گرمی،حبس اورلوڈشیڈنگ سےہلاکتوں کی تعداد838 تک پہنچ گئی

Nov 30, -0001

ویب ایڈیٹر:


کراچی : قیامت خیز گرمی کے باعث کراچی میں چار روز کے دوران جاں بحق افراد کی تعداد 838 تک جا پہنچی ہے۔ ایک طرف گھروں میں صف ماتم بچھی ہے تو دوسری جانب لواحقین اپنے پیاروں کی لاشیں سرد خانے میں رکھنے کے لیے پریشان ہیں۔ ایمبولینسز، مردہ خانوں اور قبرستان میں جگہیں کم پڑ گئیں۔


قہرانگیز گرمی کے ساتھ مرے پر سو درے کے مترادف لوڈشیڈنگ کا عذاب838 سے زائد زندگیوں کے چراغ بجھا گیا، کراچی کے مردہ خانوں میں میتیں رکھنے کیلئے جگہ بھی کم پڑ گئی۔ کراچی کے سب سے بڑے سرکار ی شفا خانے جناح اسپتال میں سب سے زیادہ لاشیں لائی گئیں،آج بھی مزید دس افراد جناح اسپتال میں دم توڑ گئے۔

عباسی شہید اسپتال سمیت کے ایم سی اسپتالوں میں 140 افراد جاں بحق ہوئے، جب کہ سول اسپتال میں 109افراد گرمی کا شکار بنے، قطر اسپتال میں 34 افراد، لیاقت نیشنل اسپتال میں 67 افراد جان کی بازی ہار گئے۔

دیگر اسپتالوں کے اعدا و شمار کے مطابق آغا خان یونیورسٹی اسپتال میں 20 ، انڈس اسپتال میں41 افراد، سندھ گورنمنٹ اسپتال نیو کراچی میں 23 افراد، ضیاء الدین اسپتال میں 35 افراد، ادارہ امراض قلب میں 40 افراد، سندھ گورنمنٹ اسپتال لیاقت آباد میں 10 افراد، اور لیاری جنرل اسپتال میں 17 افراد زندگی کی بازی ہار گئے۔

دوسری جانب جاں بحق افراد کے غم سے نڈھال لواحقین اپنے پیاروں کی میتیں سردخانے میں رکھنےکےلیے دربدر پھرتے رہے لیکن شہر کے ہر سرد خانے میں لاشوں کےانبار لگے ہیں۔ اسپتالوں اور امدادی اداروں کے مردہ خانوں میں لاشیں رکھنے کیلئے کہیں جگہ نہیں۔

شہر قائد میں قیامت خیز گرمی کی شدت کے باعث جان سے جانے والوں کیلئے سفر آخرت بھی آسان نہیں، اوپر سے لوڈشیڈنگ کے عذاب نے شہریوں کی زندگی اجیرن کررکھی ہے۔ جب کہ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایکسپو سینٹر کے ہال کو مردہ خانے میں تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ سماء

ARMY CHIEF

ZARDARI

KILLING

RUSSIA

RAMZAN

SEHRI

roza

mubarak

MUSLIMS

DEAD BODY

ASIM SALEEM BAJWA

Tabool ads will show in this div