ریاست کیخلاف جنگ کرنیوالوں کاٹرائل فوجی عدالتوں میں ہوناچاہیئے،اٹارنی جنرل

اسٹاف رپورٹ


اسلام آباد : فوجی عدالتوں کیخلاف درخواست کی سماعت کے دوران کالعدم فضل اللہ سمیت مختلف کالعدم طالبان رہنماؤں کی ویڈیوز سپریم کورٹ میں پیش کیں، اٹارنی جنرل کہتے ہیں کہ ریاست کیخلاف اعلان جنگ کرنے والوں کا ٹرائل ملٹری کورٹس میں ہونا چاہئے۔

چیف جسٹس ناصر الملک کی سبراہی میں فل کورٹ بینچ اٹھارہویں اور اکیسویں آئینی ترامیم کیخلاف درخواستوں کی سماعت کی، دوران سماعت اٹارنی جنرل نے کالعدم فضل اللہ سمیت کالعدم تحریک طالبان کے رہنماؤں کی مختلف ویڈیوز پیش کیں جن میں پاکستان کیخلاف اعلان جنگ کیا جارہا ہے جبکہ افواج پاکستان کیخلاف مختلف مسلح کارروائیاں بھی دکھائی گئی ہیں۔

اٹارنی جنرل نے کہا کہ ویڈیوز سے ثابت ہوتا ہے کہ ریاست کیخلاف اعلان جنگ ہوچکا۔ شدت پسندوں کو آرمی ایکٹ کے دھارے میں لانے کیلئے آئینی ترمیم کی گئی۔ دہشت گرد پاکستان اور ریاست کو تسلیم نہیں کرتے۔ دہشت گرد کسی بنیادی حقوق کا حقدار نہیں۔ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے استفسار کیا کہ ایسی صورتحال میں ریاست کیا کررہی ہے۔ کیا ریاست نے داعش کو دہشت گرد تنظیم قرار دیا۔ کیا مہر نبوت کو دہشت گردی کیلئے استعمال کرنے کا فعل جرم قرار دیا گیا۔ کیا کسی کو امیر المومنین یا خلفیہ قرار دینے کو جرم کہا گیا۔ اگر ایسا ہے تو نوٹیفکیشن پیش کئے جائیں۔ شدت پسندوں کے ٹرائل کا طریقہ موجود ہے، اسے استعمال کیوں نہیں کیا جاتا۔ کیا ویڈیوز میں دکھائے گئے افراد کیخلاف مقدمات درج کئے گئے۔

جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دیئے کہ آئے روز ملک میں پرتشدد واقعات ہورہے ہیں۔ پاکستان پہلے تو ایسا نہ تھا۔ جسٹس جواد نے کہا کہ پاکستان کے خلاف جنگ کرنے والوں کیخلاف کارروائی ضرور ہونی چاہئے۔ کوئی خام خیالی میں نہ رہے، پاکستان نے ہمیشہ قائم رہنا ہے۔ بتایا جائے کہ دہشت گرد کہاں سے آئے اور اس کا ذمہ دار کون ہے۔

اٹارنی جنرل نے کہا کہ ان کیمرا سماعت میں تمام حقائق پیش کئے جاسکتے ہیں۔ اکیسویں ترمیم میں دہشت گردوں کے بنیادی حقوق ختم کئے گئے۔ جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ پاکستان ہے تو آئین ہے۔ کیس کی سماعت کل تک ملتوی کردی گئی۔ سماء

ARMY CHIEF

ZARDARI

KILLING

RUSSIA

TALIBAN

RAMZAN

national action plan

SEHRI

roza

mubarak

MUSLIMS

DEAD BODY

ASIM SALEEM BAJWA

military courts

ATTORNEY GENERAL

dacoity

Tabool ads will show in this div