لیاری میں رینجرز کا آپریشن، دو ٹارچر سیلز کا انکشاف

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ


شہر قائد کی جہاں امن و امان کی بحالی کیلئے رینجرز کی بھاری نفری نے لیاری میں آپریشن کیا ہے۔ آپریشن کے دوران جو آٹھ گھنٹے جاری رہا دو ٹارچر سیل اور بھاری تعداد میں اسلحہ برآمد ہوا اور اسی افراد کو گرفتار کرلیا گیا۔

آپریشن کے دوران لیاری کے مکینوں نے احتجاج کیا اور فائرنگ سے دو خواتین سمیت تین افراد زخمی ہوگئے۔

 رینجرز اور پولیس کے تین ہزار سے زائد اہلکاروں نے پیپلز پارٹی کے گڑھ لیاری کے علاقوں نیا آباد ، بغدادی ، عثمان آباد ، چاکیواڑہ ، کھڈا مارکیٹ ، سیفی لین ، گھاس منڈی اور دھوبی گھاٹ کا علی الصباح محاصرہ شروع کردیا تھا۔

اس دوران نیا آباد میں لوگ گھروں سے باہر نکل آئے اور سڑک پر رکاوٹیں کھڑی کر کے احتجاج شروع کر دیا۔ کئی مشتعل افراد نے ٹائروں اور لکڑیوں کو آگ بھی لگادی۔

نامعلوم افراد کی فائرنگ سے دوخواتین سمیت تین افراد زخمی بھی ہوئے ۔ تاہم رینجرز اور پولیس نے حکمت عملی سے صورت حال پر قابو پایا اور کارروائی جاری رکھی ۔

رینجرز نے دعویٰ کیا  کہ سرچ آپریشن کے دوران دو عقوبت خانے بھی دریافت ہوئے جہاں سے ایذاء رسانی کے آلات بھی ملے  ۔
 

آٹھ گھنٹے کے سرچ آپریشن کے دوران رینجرز نے 80 سے زائد افراد کو حراست میں لیا ہے ۔

رینجرز کی کارروائی پر بعض حلقوں نے تشویش کا اظہار کیا ہے ۔ دوسری جانب سندھ رینجرز نے واضح کیا ہے کہ شہر میں امن وامان کے لئے بلاتفرق کارروائی جاری رہے گی ۔ سماء

میں

کا

Ayan Ali

رینجرز

Killed

haider