کشمیریوں کی سفارتی،اخلاقی،سیاسی مدد سےپیچھےنہیں ہٹیں گے

1327799-ForeignSecretaryAizazAhmadChaudhryPHOTOREUTERS-1487163365 واشنگٹن : امریکا میں پاکستانی سفیر اعزاز چوہدری کا کہنا ہے کہ بھارت نے مذاکرات کا عمل خود روکا، مذاکراتی عمل کی معطلی سے باہمی تعلقات متاثر ہوئے، تاہم پھر بھی پاکستان بھارت سے مذاکرات کیلئے تیار ہے، ان کا کہنا تھا کہ بھارتی رویے جیسا بھی ہو پاکستان کشمیریوں کی سفارتی، سیاسی اور اخلاقی مدد جاری رکھے گا۔ امریکا کے شہر واشنگٹن میں ہونے والے ورلڈ افیئرز کونسل کے تحت پروگرام میں خطاب کرتے ہوئے امریکا میں تعینات پاکستان کے سفیر اعزاز چوہدری کا کہنا تھا کہ دہشت گردی میں نمایاں کمی سے معیشت پر مثبت اثر مرتب ہوئے، پاکستان امریکا سے عارضی نہیں وسیع البنیاد تعلقات کا خواہاں ہے، پاکستان اور امریکا کے تاریخی تعلقات 7 دہائیوں پر مشتمل ہیں۔

اعزاز چوہدری کا کہنا تھا کہ پاکستانی تارکین وطن دونوں ملکوں کے درمیان پل کا کام کر رہے ہیں، بھارت نے مذاکرات کا عمل خود روکا، مذاکراتی عمل کی معطلی سے باہمی تعلقات متاثر ہوئے، انہوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی نہ صرف پوری دنیا بلکہ پاکستان اور بھارت دونوں کا مشترکہ مسئلہ ہے، جس کیلئے دونوں ملکوں کو تعاون کرنا چاہیئے۔

Aizaz-Chaudhry اس موقع پر اعزاز احسن کا کہنا تھا کہ اگر بھارت چاہیئے تو پاکستان بھارت سے مذاکرات کیلئے تیار ہے، پاکستان کشمیریوں کی سفارتی، سیاسی اور اخلاقی مدد جاری رکھے گا۔ سماء

Pakistani Ambassador

Tabool ads will show in this div