وکلاء کالے کوٹ سے تنگ آگئے

May 16, 2017
SC Kala Coat Petition Isb Pkg 16-05 [video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/05/SC-Kala-Coat-Petition-Isb-Pkg-16-05.mp4"][/video]

کراچی : کالے کوٹ والے "کالے کوٹ "سے اُکتا گئے ہیں، وکلاء کے ڈریس کی تبدیلی کیلئے سپریم کورٹ درخواست دائر کردی گئی ۔

کالا کوٹ اور کالی ٹائی وکلاء کی شناخت ہے لیکن اب وکلاء اب کالے کوٹ سے تنگ آگئے ہیں جس کے بعد ایڈوکیٹ انیس جیلانی وکلاء کے ڈریس کی تبدیلی کیلئے سپریم کورٹ رجوع کرلیا۔

درخواست گزار کا مؤقف ہے کہ گرمیوں میں کالا کوٹ کالی ٹائی اور کالی پتلون پہننا بہت مشکل ہو چکا مگر سارے ساتھی اُن سے اتفاق نہیں کرتے۔

، صدر سپریم کورٹ بار رشید رضوی کا کہنا تھا کہ چالیس سال سے اوپر ہوگئے ہیں کبھی کالے کوٹ سے دقت نہیں ہوئی، جہاں درجہ حرارت 50 ڈگری تک ہوتا ہے وہاں مسائل تو ہیں۔

صدیق بلوچ ایڈووکیٹ نے کہا کہ کالا کوٹ وکیل کی شان ہے، وکیل کا مان ہے، گرمیاں ہوں یا سردیاں دونوں میں کالا کوٹ پہننا بہت ضروری ہے۔

درخواست میں وکلاء کا یونیفارم موسمی حالات کے مطابق کرنے کی استدعا کی گئی ہے، کچھ کالے کوٹ والے اس تجویز کے حامی بھی ہیں۔

سینئر قانون دان شعیب شاہین کا کہنا تھا کہ یہ ایک اچھی تجویز ہے اور ایسی تبدیلی ہو سکتی ہے، ایڈوکیٹ ارشد کیانی نے کہا کہ کوٹ کے بجائے اگر باریک گائونز دے دیئے جائیں تو وہ بہتر ہوگا۔

سپریم کورٹ میں دائر درخواست میں وکلاء کیلئے ججز کو مائی لارڈ کی بجائے سر یا میڈم کہہ کر پکارنے کی اجازت بھی مانگی گئی ہے۔ سماء

dress code

Tabool ads will show in this div