پاکستان میں 9ماہ میں بجٹ خسارہ1238ارب روپے سے تجاوزکرگیا

People shop at a vegetable market in Islamabad, Pakistan, on Tuesday, June 10, 2008. Photographer: Asad Zaidi/Bloomberg News

اسلام آباد : حکومت کے اخراجات بے قابو کہاں کی کفایت شعاری، کیسی بچت؟؟ کہ نو ماہ میں بجٹ خسارہ بارہ سو اڑتیس ارب روپے سے تجاوز کر گیا، ماہرین نے مہنگائی میں اضافے کی پیشگوئی کر دی۔ پاکستان کے لوگوں کی کہانی اس سے مختلف نہیں کہ آمدن اٹھنی خرچہ روپیہ، جی ہاں ملک میں کفایت شعاری کے حکومتی دعوے بڑے بڑے مگر حقیقت کچھ اور ہی نکلی، ملکی معیشت کو پھر بجٹ خسارے نے جکڑ لیا، جولائی تا مارچ 3145 ارب روپے آمدن کے مقابلے میں اخراجات 4383 ارب روپے سے تجاوز کرگئے۔

1047563-Bloombergx-1455574488-643-640x480 بجٹ خسارہ پورا کرنے کیلئے 1238 ارب روپے قرض لیا گیا، مالی سال کے پہلے نو ماہ میں 1094 ارب روپے قرضوں پر سود کی نذر ہوگئے، اقتصادی ماہرین کے مطابق 1276 ارب روپے کے ہدف کے مقابلے میں سالانہ بجٹ خسارہ کہیں زیادہ ہونے کا خدشہ ہے۔ 57517634dfa52 ماہرین نے حکومت کو مشورہ دیا ہے کہ خسارے سے نکلنے کیلئے ٹیکس آمدن بڑھانا ہوگی۔ آمدن کم ہونے کے باعث صوبوں کو نو ماہ مں 1412 ارب روپے ہی مل سکے ۔ اس دوران صوبوں نے 137 ارب روپے کم خراجات کیے ۔ دفاع پر 536 ارب جبکہ وفاقی ترقیاتی منصوبوں پر 323 ارب روپے خرچ ہوئے۔ سماء

TAX

monthly income

trade deficit

budget 2017

Tabool ads will show in this div