خیبرپختونخوا اور پنجاب کے بعد سیلاب نے سندھ کا رخ کر لیا

اسٹاف رپورٹ:

کراچی: خیبرپختونخوا اور پنجاب کے بعد سیلاب نے اب سندھ کا رخ کرلیا ہے۔ دریائےسندھ میں گڈو اورسکھر بیراج میں پانی کےبہاؤ میں مسلسل اضافہ ریکارڈ کیا جارہا ہے۔کئی دیہات زیرآب آگئے، فلڈ ایمرجنسی نافذ کردی  گئی ہے ۔تربیلا ڈیم میں پانی جمع ہونے کی گنجائش 20 فٹ رہ گئی ۔

سندھ اورپنجاب کے دریاؤں میں طغیانی کے باعث دریائے سندھ گھوٹکی کے مقام پر بپھرگیا جس کے باعث قادر پور میں25 دیہات زیرآب آ گئے جبکہ 75دیہات کازمینی رابطہ منقطع ہو چکا ہے۔

کندھ کوٹ میں اونچے درجے کا سیلاب ہے ، کشمور میں سیلاب کے باعث سیکڑوں دیہات زیر آب آ گئے۔ ضلعی انتظامیہ تاحال متاثرین کو مدد کی فراہمی میں ناکام ہے۔دریائے سندھ میں گڈو اورسکھر بیراج پر بھی پانی کے بہاؤ میں اضافے کے باعث مزید 10دیہات زیرآب آ گئے۔

علی واہن پر ریلیف کیمپ لگادیا گیا۔ ہفتے اور اتوارکو بڑا سیلابی ریلا گزرنےکا امکان ہے۔

تربیلا ڈیم 1530فٹ تک بھرگیا، ڈیم میں مزید پانی جمع ہونے کی گنجائش صرف 20 فٹ رہ گئی ہے۔ مظفرگڑھ میں سیلابی ریلا تحصیل علی پور میں داخل ہو چکا ہے۔

راجن پورمیں کوہ سلیمان کے پہاڑوں پر بارش کا سلسلہ جاری ہے، درہ کاہ سلطان اور درہ چھاچھڑ سے بھی  بڑےسیلابی ریلے گزریں گے۔ صورتحال کے باعث دریاؤں میں کشتی چلانے پر پابندی ہے اورفلڈ ایمرجنسی نافذ کردی گئی۔

ادھر ڈیرہ غازی خان ،جکھڑامام شاہ کے حفاظتی بند میں پڑنے والاشگاف بھی پُرنہ کیا جاسکا۔ سماء

KPK

PUNJAB

sind

GHOTKI

Tabool ads will show in this div