سانحہ ائر بلو: لواحقین 5 سال بھی امدادی رقم کے منتظر

اسٹاف رپورٹ:


اسلام آباد:سانحہ ائر بلیو کو 5سال بیت گئے مگر جاں بحق افراد کے بعض لواحقین کو آج تک امدادی رقم نہ مل سکی۔

اٹھائیس جولائی 2010 کی صبح 8 بجکر 45 منٹ پر کراچی سے اسلام آباد جانے والی ائر بلیو کی پرواز 202 مارگلہ کی پہاڑیوں سے ٹکرا کر تباہ ہو گئی تھی،اندوہناک سانحہ میں جہاز کے عملے سمیت 152 مسافر اپنی جان کی بازی ہار گئے تھے۔

ائربلیو انتظامیہ کی طرف سے تمام جاں بحق افراد کے لواحقین کیلئے 50 لاکھ روپے فی کس کا اعلان کیا گیا تھا لیکن 12 خاندانوں نے انشورنس کی اصل رقم کا تعین ہونے تک معاوضہ وصول کرنے سے انکار کردیا تھا۔

لواحقین کا کہنا ہے سانحہ کے بعد عدالت میں دائر مقدمہ کی گزشتہ 2 برس سے سماعت نہیں ہوسکی ۔ بعض جاں بحق افراد خاندان کے واحد کفیل تھے، جن کی موت کے بعد لواحقین کسمپرسی کے عالم میں ہیں لیکن انہیں معاوضے کی ادائیگی نہیں کی گئی ۔

ائر بلیو سانحہ کی تحقیقاتی رپورٹ میں حادثے کا ذمہ دار پائلٹ کو قرار دیا گیا تھا۔ 5برس گزر جانے کے باوجود لواحقین آج بھی انصاف کے لیے عدالتوں کا دروازہ کھٹکھٹا رہے ہیں، سماء

air blue

CRASH

Tabool ads will show in this div