مشال خان قتل،سپریم کورٹ سے ازخود نوٹس لینے کی درخواست

http _o.aolcdn.com_hss_storage_midas_b32c6138081ae2fbee1fea0653c66908_205161728_Screen+Shot+2017-04-13+at+11.37.07+AM.png اسلام آباد : مردان کی عبدالولی خان یونی ورسٹی میں توہین مذہب کے نام پر طالبعلم کے قتل پر چیف جسٹس سے ازخود نوٹس لینے کی اپیل کی گئی ہے۔ سماء کے مطابق سول سوسائیٹی کی جانب سے مردان کی عبدالولی خان یونی ورسٹی میں توہین مذہب کے نام پر طالبعلم کے قتل پر چیف جسٹس سے ازخود نوٹس لینے کی اپیل کی گئی ہے۔ سول سوسائیٹی کی جانب سے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی گئی ہے۔ 1_29 درخواست گزار کا کہنا ہے کہ مردان یونیورسٹی میں توہین مذہب کے نام پرطالبعلم کے قتل کا معاملہ ہے، چیف جسٹس سے درخواست ہے کہ معاملے پر ازخود نوٹس لیں۔ 6C9C2018-EE2D-49A5-8145-9498FDE717F4_w1023_r1_s درخواست کا کہنا ہے کہ طالب علم کو ولی خان یونیورسٹی میں توہین مذہب کے نام پر قتل کیا گیا، واقعہ ہماری معاشرتی اقدار اور بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے، اس طرح کے واقعات سے معاشرے میں غلط پیغام جا رہا ہے۔ سماء

university

SUPREME COURT OF PAKISTAN

accused of blasphemy

Mashal Khan

wali khan university

last interview

Tabool ads will show in this div