تفتان،پاک ایران سرحد پرزائرین پرخودکش حملہ،24افراد جاں بحق

ویب ایڈیٹر:


کوئٹہ : بلوچستان میں ایرانی سرحد کے قریب تفتان میں زائرین پر خودکش حملے میں چوبیس زائرین جاں بحق، جب کہ پچیس زخمی ہوگئے۔

سیکیورٹی ذرائع کے مطابق  ایران سے متصل سرحدی شہر تفتان میں تین سو زائرین دو ہوٹلوں میں قیام پذیر تھے، کہ رات گئے خود کش حملہ آور ہوٹل کے قریب آیا اور سیکیورٹی پر مامور لیویز فورس کے اہل کار پر فائرنگ کی جس سے لیویز فورس کا اہلکار شدید زخمی ہوگیا، خود کش حملہ آور ہوٹل میں داخل ہوا اور وہاں اپنے آپ کو دھماکے سے اڑا لیا۔

خود کش حملہ آور کے دیگر ساتھی دوسرے ہوٹل میں داخل ہوئے اور خود کو اڑا دیا، دو خود کش حملوں میں چوبیس زائرین جاں بحق، جب کہ پچیس زخمی ہوئے۔ واقعہ کے بعد فرنٹیئر کور اور لیویز فورس نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔ جاں بحق ہونے والے زائرین کی لاشیں ہیلی کاپٹر کے ذریعے کوئٹہ منتقل کی جارہی ہیں۔

صوبائی وزیر داخلہ بلوچستان میر سرفراز بگٹی اور سیکریٹری داخلہ اکبر درانی کے مطابق ایران سے کوئٹہ آنے والے تین سو کے لگ بھگ زائرین آٹھ بجے تفتان پہنچے تھے۔

صوبائی وزیر داخلہ کے مطابق زائرین کی سیکیورٹی پر تعینات ایف سی اور لیویز اہل کاروں نے جوابی فائرنگ کی، جوابی فائرنگ سے ایک حملہ آور ہلاک جبکہ تین نے خود کو اڑا لیا۔

انہوں نے بتایاکہ واقعہ میں محفوظ رہنے والے افراد کو ایف سی قلعہ میں منتقل کردیا گیا۔ ایک سوال کے جواب میں وزیر داخلہ بلوچستان نے بتایا کہ زائرین کو کوئٹہ سے ایران کی فضائی سروس کی پیش کش کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کوئٹہ سے تفتان تک چھ سو کلو میٹر سڑکوں کو محفوظ بنانا مشکل ہے۔ سماء

channel

Tabool ads will show in this div