ٹرمپ کے اٹارنی نئےاسکینڈل کی زد میں،استعفیٰ کیلئےدباؤ

_94902474_eea897e9-6599-4688-81df-b5f695d1b789 واشنگٹن : امریکی اٹارنی جنرل جیف سیشنز نے روسی سفیر سے مبینہ ملاقاتوں کی خبروں کو مسترد کرتے ہوئے  ڈیموکریٹک کے مطالبے کو رد کردیا، جیف سیشنز کا کہنا ہے کہ  روسی سفیر سے ٹرمپ کے قائمقام کی حیثیت سے نہیں بلکہ امریکی سینیٹرکی حیثیت سے بات کی تھی۔ غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کی جانب سے جاری رپورٹ کے مطابق ایف بی آئی کی نئی تحقیقات میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ  کی انتخابی مہم کے دوران موجودہ وزیر انصاف جیف سیشنز کے روس کے سفیر سرگئی  کسلیاک  سے دو بار ملاقات کا انکشاف ہوا ہے، تاہم جیف سیشنز نے جنوری میں اپنی تصدیقی سماعت کے وقت یہ تعلقات ظاہر نہیں کیے تھے۔ اٹارنی جنرل کا حلف اٹھانے سے قبل جیف سیشنز سینیٹر کے عہدے پر فائز تھے۔ _94902498_64b2f52b-c3fc-4ecc-8076-12fe1dfefb89 ڈیموکریٹک اراکین کا کہنا ہے کہ سیشنز نے صدارتی انتخاب کی مہم کے دوران ڈونلڈ ٹرمپ کی حمایت کی تھی اور انہوں نے امریکی سینیٹ کا رکن ہوتے ہوئے انتخابی مہم کے لیے ٹرمپ کے مشیر کے طور پر خدمات بھی انجام دیں، جب کہ انہوں نے گزشتہ سال جولائی میں ریپبلکن نیشنل کنونشن کی تقریب کے موقع پر روسی سفیر سرگئی کسلیاک سے پہلی ملاقات کی، جب کہ دوسری ملاقات انہوں نے کپٹل ہل میں اپنے دفتر میں ان سے ملاقات کی تھی۔ ملاقاتوں کی خبریں منظر عام پر آنے کے بعد ڈیموکریٹک اراکین کی جانب سے ٹرمپ انتظامیہ پر دباؤ مزید بڑھ گیا ہے،ڈیموکریٹک اراکین نے نئے اسکینڈل پر امریکی اٹارنی جنرل سے مستعفیٰ ہونے کا اعلان کیا ہے۔ دوسری جانب امریکا کے اٹارنی جنرل جیف سیشنز نے امریکا کے صدارتی انتخابات میں مبینہ روسی مداخلت کے حوالے سے ایف بی آئی کی تحقیقات سے خود کو الگ کرلیا۔ _94902497_0c8f3fc7-bdb6-4d3a-8150-1663b5e64df7 واشنگٹن میں نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے جیف سیشنز نے کہا کہ انہوں نے روسی سفیر سے ٹرمپ کے قائمقام کی حیثیت سے نہیں بلکہ امریکی سینیٹر کی حیثیت سے بات کی تھی۔ سینیٹ کی انٹیلی جنس کمیٹی اپنے طور پر بھی معاملے کی انکوائری کر رہی ہے، جب کہ ایوان نمائندگان کی انٹیلی جنس کمیٹی نے بدھ کو اپنی تحقیقات کے طریقہ کار کا اعلان کیا تھا۔ US President Donald J. Trump delivers his first address to a joint session of Congress from the floor of the House of Representatives in Washington, DC, USA, 28 February 2017. / AFP PHOTO / POOL / JIM LO SCALZO یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ جیف سیشنز سے متعلق ملاقاتوں کی خبریں ایسے وقت میں سامنے آئی ہیں، جب امریکی کانگریس کی کمیٹی نے گزشتہ برس کے صدارتی انتخابات میں مبینہ روسی مداخلت سے متعلق تفتیش کرنے پر اتفاق کیا ہے۔ سماء

ALLEGATIONS

ATTORNEY GENERAL

RESIGNATION

Russain ambassador

CAPITOL HILL

Jeff Session

Tabool ads will show in this div