لعل شہباز قلندر کی درگاہ میں دھماکا، 84افراد شہید

Blast EX 16-022

Blast 16-02 Blast 16-021

دادو : سیہون میں لعل شہباز قلندر کی درگاہ کے احاطے میں دھمال کے موقع پر دھماکے میں 84 افراد شہید اور سیکڑوں زخمی ہوگئے، جاں بحق و زخمیوں میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں، جمعرات کے باعث زائرین کی بڑی تعداد مزار میں موجود تھی، دھماکے کے بعد بھگڈر مچ گئی، درجنوں زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے، شہر کے اسپتالوں میں طبی سہولیات اور ایمبولینسوں کی کمی کے باعث ہلاکتوں میں اضافے کا بھی خدشہ ہے۔

غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق پولیس حکام نے سیہون کی لعل شہباز قلندر درگاہ کے احاطے میں زور دار دھماکے میں 84 افراد کی شہادت کی تصدیق کردی، خواتین اور بچوں سمیت سیکڑوں افراد زخمی ہیں، زخمیوں کو اسپتال منتقل کردیا گیا، امدادی کارکنان اور ایمبولینسوں کی کمی کے باعث شہریوں نے اپنی مدد آپ کے تحت پرائیویٹ گاڑیوں میں زخمیوں اور لاشوں کو اسپتال پہنچایا، سیہون کے اسپتال میں ڈاکٹرز اور طبی سہولیات کی کمی کا سامنا ہے، آرمی اور رینجرز کی ٹیمیں بھی پہنچ گئیں، شدید زخمیوں کو دیگر قریبی شہروں کے اسپتالوں میں پہنچایا گیا۔

مزید جانیے : آرمی چیف کی دہشت گردوں کو للکار، قوم کے نام پیغام

Pakistani devotees gather on June 18, 2014 at the shrine of 13th century Muslim Sufi saint Lal Shahbaz Qalandar, in Sehwan, 250 kilometres (150 miles) north of Karachi, on the anniversary of the saint's death. Dozens of people have died at a religious festival at a shrine in southern Pakistan during a severe heatwave, officials said on Thursday. People were arriving for the past five days despite temperatures hovering around 47 degrees Celsius (117 Fahrenheit). AFP PHOTO / YOUSUF NAGORI

نمائندہ سماء منصور مغیری کے مطابق تعلقہ اسپتال سیہون کی انتظامیہ نے تصدیق کی ہے کہ 50 سے زائد افراد کی لاشیں منتقل کی گئی ہیں، جن میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں، دھماکے کے باعث لاشوں کی حالت انتہائی خراب ہے، شناخت کرنا بھی مشکل ہورہا ہے، درجنوں زخمی بھی اسپتال لائے گئے ہیں جنہیں طبی امداد دینے کی کوششیں جاری ہیں۔

ویڈیو دیکھیں : دھماکا کیسے ہوا، عینی شاہد نے بتادیا

ذرائع کا کہنا ہے کہ درگاہ لعل شہباز قلندر میں سیکیورٹی کے انتہائی ناقص انتظامات تھے، واک تھرو گیٹ بھی خراب تھے، پولیس کی نفری بھی انتہائی کم تھی۔

OLYMPUS DIGITAL CAMERA

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ لعل شہباز قلندر کے مزار پر جمعرات کے باعث خواتین اور بچوں سمیت ہزاروں زائرین درگاہ میں موجود تھے، مغرب کے وقت دھمال جاری تھا کہ زور دار دھماکا ہوگیا جس کی آواز پورے شہر میں سنی گئی، واقعے کے بعد علاقے میں بھگدڑ مچ گئی۔

مزید دیکھیں : دھماکا خودکش تھا، ابتدائی اطلاعات

نمائندہ سماء کا کہنا ہے کہ مقامی اسپتالوں میں جگہ، ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف کی قلت کے باعث زخمیوں کو دیگر شہروں میں منتقل کیا جارہا ہے، زخمی تڑپ تڑپ کر مر رہے ہیں، اسپتال حکام کی جانب سے  زخمیوں کیلئے خون کی بھی اپیل کی گئی ہے۔

Sehwan Blast Stills Combind 16-021 Sehwan Blast Pak Army 16-02

لعل شہباز قلندر مزار پر دھماکے سے تباہی کے مناظر

کمشنر حیدر آباد نے درگاہ کے احاطے میں دھماکے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ حیدرآباد، دادو اور سیہون کے اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے، ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف کو طلب کرلیا گیا۔ سماء

SUICIDE ATTACK

sucide attack

AMBULANCE

hyderbad

sehwan Blast

lal shabaz qalandar

Sindh Blast

Shrine Blast

Resque

Tabool ads will show in this div