رب کوخلوت میں راضی کرنیکاجتن،لاکھوں فرزندےآج اعتکاف بیٹھیں گے

اسٹاف رپورٹ


کراچی/اسلام آباد/پشاور/کوئٹہ/لاہور : اعتکاف ماہ رمضان کی خصوصی عبادات میں سے ایک ہے آج لاکھوں فرزندان اسلام اعتکاف میں بیٹھ جائیں گے۔
اعتکاف کا معنی ٹھہرنا جمے رہنا اور کسی مقام پر اپنے آپ کو روکے رکھنا ہے۔ شرعی اعتکاف بھی اسی معنی میں ہے کہ اللہ تعالٰی کا قرب حاصل کرنے کے لئے مخصوص طریقے پر مسجد میں ٹھہرنا ' سب سے الگ تنہائی میں اس کی عبادت اور اس کے ذکر و فکر میں مشغول رہنا اور اس کے حضور توبہ و استغفار کرنا ہے ۔

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ہر سال رمضان کے آخری عشرے کا اعتکاف کرتے تھے، رسول صلی اللہ علیہ وسلم جب سے مدینہ منورہ تشریف لائے آپ نے اعتکاف کبھی نہیں چھوڑا ۔ حتی کہ اپنی عمر عزیز کے آخری برس آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے رمضان المبارک کے دو عشروں کا اعتکاف کیا ۔

اعتکاف کا وقت بیسواں روزہ ختم ہونے کے وقت غروب آفتاب سے شروع ہوتا ہے اور عید کا چاند ہونے تک باقی رہتا ہے'خواتین کو مسجد میں اعتکاف نہیں کرنا چاہئے بلکہ ان کا اعتکاف گھر میں ہی ہو سکتا ہے۔
 
حضور اکرم کا فرمان ہے کہ اعتکاف کرنے والا گناہوں سے بچا رہتا ہے اور جس نے رمضان المبارک میں دس دن کا اعتکاف کر لیا اس کا عمل ایسا ہے جیسے دو حج اور دو عمرے کر لے۔ سماء

میں

games

Tabool ads will show in this div