بسوں میں سفر خواتین کا دوہرا امتحان

BUS HARRASSMENT 2100 PKG 22-09

کراچی : حادثے میں جان جانے کا ہی دکھ نہیں ہے، جان بچ بھی جائے تو عزت داؤ پر لگی ہوتی ہے،کراچی کی بسوں میں سفر کرتی پچپن فیصد خواتین کو ہراساں کیا جاتا ہے ۔

بہن، بیٹی یا پھر ماں عورت کے مختلف روپ ہیں مگر کراچی کی سڑکوں پر روپ کوئی بھی ہو، عورت ڈری سہمی رہتی ہے، سماء تہلکہ نے پتا لگا لیا۔

تحقیقی رپورٹ میں خوفناک انکشاف ہوا کہ کراچی میں پچپن فیصد خواتین کو پبلک ٹرانسپورٹ میں ہراساں کیا جاتا ہے، کراچی ایسٹ سب سے زیادہ بدنام ہے۔

گلشن اقبال اور گلستان جوہر میں تراسی فیصد خواتین بری نظروں اور نازیبا جملوں کا نشانہ بنتی ہیں مگر خوف کچھ بولنے نہیں دیتا، آواز کوئی اٹھائے بھی کیسے،، اس معاملے میں قانون ہی بے بس ہے۔

مجبوری سے نکلنا ہو یا ہو پیشہ ورانہ ذمہ داری، بسوں میں سفر خواتین کا دوہرا امتحان ہے۔ سماء

BUS

HARRASMENT

Tabool ads will show in this div