قندیل بلوچ کے ماں باپ کے خلاف مقدمہ درج

qandeel-sonu ملتان : ملتان پولیس نے بیان بدلنے پر مقتولہ قندیل بلوچ کے والدین کے خلاف مقدمہ درج کرلیا، مقدمہ پہلے بیان سے انحراف پر درج کیا گیا۔ سماء کے مطابق ملتان پولیس نے مقتولہ قندیل بلوچ کے والدین کے خلاف بیان سے مکرنے پر مقدمہ درج کرلیا، قندیل بلوچ کے والدین نے اپنی بیٹی کے قتل میں اپنے بڑے بیٹے کے ملوث ہونے کے حوالے سے پولیس کو بیان ریکارڈ کروایا تھا۔ MULTAN QANDEEL MURDER 0800 PKG 17-07 اسسٹنٹ سب انسپکٹر کی مدعیت میں قندیل کے والدین محمد عظیم اور انور بی بی کے خلاف پاکستان پینل کوڈ کی دفعہ 213 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا۔ Qandeel namaz E janza Ex Mul 17-07 ایف آئی آر کے مطابق قندیل قتل کیس میں نامزد ملزم اور بڑا بھائی محمد اسلم شاہین نے یہ کہہ کر ایک لفافہ اپنے والدین کے حوالہ کیا کہ 'آپ کے مطالبات پورے ہوگئے اب ہمارے حق میں عدالت میں بیان ریکارڈ کروائیں'۔ جس کے بعد والدین کی جانب سے پہلے دیئے گئے بیان سے لاتعلقی ظاہر کی گئی، ایف آئی آر اندراج کے مطابق دونوں فریقین بعد ازاں عدالت میں پیش ہوئے جہاں قندیل کے والدین نے اسلم شاہین کے حق میں بیان جمع کروایا، جو پاکستان پینل کوڈ کی دفعہ 213 کے تحت ایک جرم ہے۔ واضح رہے کہ اسلم شاہین کو قندیل بلوچ قتل کیس میں پاکستان پینل کوڈ کی دفعہ 109 کے تحت جرم پر اکسانے پر نامزد کیا گیا تھا۔ qandeel1 قندیل بلوچ گزشتہ برس 16 جولائی کو ملتان میں واقع اپنے کرائے کے گھر میں مردہ پائی گئی تھیں، ان کے والد نے الزام عائد کیا تھا کہ ان کے چھوٹے بیٹے وسیم نے اپنے بڑے بھائی اسلم کے کہنے پر غیرت کے نام پر قندیل کو قتل کیا، قتل کے بعد وسیم جائے وقوع سے فرار ہوگیا تھا تاہم بعدازاں اسے گرفتار کرلیا گیا اور ایک پریس کانفرنس کے دوران اس نے اپنی بہن کے قتل کا اعتراف کیا۔ سماء

honor killing

Mufti Qavi

Brothers Killed Sister

Model Murder

Tabool ads will show in this div