طیبہ تشدد کیس،پولیس کی سخت الفاظ میں سرزنش

Jan 25, 2017
Tayyaba Investigation Isb Pkg 18-01 [video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/01/Tayyaba-Transcribition-1500-Sot-11-01-1.mp4"][/video] اسلام آباد: طیبہ تشدد کیس میں جج نے سوال کرتے ہوئے پوچھا کہ طیبہ کے والد کو وکیل راجہ ظہور کے پاس لیکرکون گیا؟ سپریم کورٹ میں سماعت پرچیف جسٹس نے واضح کردیا کہ اگر پولیس ملوث نکلی تو بچ کر نہیں نکلے گی، اس موقع پر ڈی آئی جی کا کہنا تھا کہ چالان کل جمع کرائیں گے، انکوائری رپورٹ میں راجا خرم اوراہلیہ ملزم قرار دیئے گئے ہیں۔ سپریم کورٹ آف پاکستان میں کم سن ملازمہ طیبہ تشدد کیس کی سماعت ہوئی، سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں کیس کی سماعت کی، آج ہونے والی سماعت میں ڈی آئی جی اسلام آباد نے چالان عدالت میں پیش کیا۔ Tayyaba Follow Up Isb Pkg 12-01 چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ بچوں سے گھروں میں کام کرانا بڑا مسئلہ ہے، ایسے معامالات دبانے کی کوشش کی جاتی ہے۔ جسٹس ثاقب نثار نے پوچھا کہ گھریلو ملازمین کیلئے کیا قانون سازی ہوئی ؟ دیکھیں گے عام قانون کے تحت کیس نمٹائیں یا غیر معمولی قدم اٹھائیں۔ Tayyaba Transcribition 1500 Sot 11-01 انہوں نے مزید کہا کہ ملزمہ کے شوہر ایک جوڈیشل افسر ہیں اور ملزموں کیخلاف فوجداری مقدمہ چلانے کا جائزہ لیں گے۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ہم کیس کی تہہ تک پہنچنا چاہتے ہیں۔ سماعت کے دوران ایڈووکیٹ جنرل اسلام آباد نے بتایا کہ کیس کی تحقیقات مکمل ہوچکی ہیں اور مکمل چالان کل جمع کرائیں گے۔ TAYYABA FRESH PKG 11-01 ASIF چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ خرم علی خان آئے یا نہیں ؟ جواب میں ایڈووکیٹ جنرل نے کہا کہ خرم علی خان کو نوٹس جاری نہیں ہوا تھا۔جسٹس ثاقب نثار نے پولیس سے استفسار کیا کہ چالان میں کس کو نامزد کیا گیا ہے تو پولیس نے جواب دیا کہ ماہین ظفر اور خرم خان کو چالان میں ملزم نامزد کیا گیا تھا۔ سماعت کے دوران چیف جسٹس نے سوال پوچھا کہ ناقابل ضمانت جرم کی دفعات ہوسکتی ہیں یا نہیں ؟انہوں نے کہا کہ گھریلو ملازمین کے تحفظ کیلئے قانون نہ ہونے پر تشویش ہے اور یہ میری نہیں قانون بنانے والوں کی غلطی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس معاملے پر جوڈیشل افسران کو نوٹس جاری کرسکتے ہیں اور جوڈیشل افسران نے متاثرہ بچی کی حوالگی کا فیصلہ کیسے سنایا؟ یہ پوچھ سکتے ہیں کہ 2 جوڈیشل افسران نے کیسے ضمانت دی ؟ ماہین ظفر کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ قابل ضمانت کیس کی سماعت نہیں کرسکتی۔ TAYYABA FRESH 1500 PKG 11-01 ASIF واضح رہے کہ فیصل آباد کی رہائشی کمسن گھریلو ملازمہ طیبہ کو اسلام کے ایڈیشنل سیشن جج کی اہلیہ ماہین نے سفکا طریقے سے بدترین تشدد کا نشانہ بنایا تھا جس کے بعد صلح ہونے کی خبروں پر چیف جسٹس سپریم کورٹ نے معاملے پر ازخود نوٹس لیا۔ سماء

SCP

Maheen Zaffar

Tayyeba Tortured Case

OSD Judge Bail

Raja Khurram Bail

Additional Session Judged

Tabool ads will show in this div