ڈاکٹروں کی غفلت نے عمر بھر کیلئے معذور کردیا

Another Stent Case Lhr PKg 23-01

لاہور : ميو اسپتال ميں دل کے مريض کی انجيو پلاسٹی کرتے ہوئے ڈاکٹر نے مبينہ طور پر ٹانگ کی نس کاٹ دی، غير رجسٹرڈ اسٹنٹ خريدنے پر مجبور کيا گيا، مريض کے لواحقين نے ايف آئی اے کو درخواست دے دی۔

دل کا روگ تو تھا ہی، ڈاکٹروں کی مبينہ غفلت نے  عمر بھر کیلئے معذور بھی کرديا۔ لاہور کے علاقے سبزہ زار کے شيخ اسلام کا 15 دسمبر کو ميو اسپتال ميں آپريشن ہوا، انجيو پلاسٹی ميں مبينہ غفلت سے ٹانگ کی نس کٹ گئی، جسے اب کاٹنے کے سوا کوئی چارہ نہيں۔

آپريشن تو ٹھيک ہوا نہيں ليکن ڈاکٹروں نے ايک لاکھ 60 ہزار روپے وصول کرلئے۔ شيخ اسلام کے بيٹے کا الزام ہے کہ انہيں غير رجسٹرڈ اسٹنٹ خريدنے پر مجبور کيا گيا، جس کیخلاف انہوں نے ايف آئی اے کو درخواست دے دی ہے۔

درخواست ميں ميو اسپتال کے ڈاکٹر ثاقب شفيع کو نامزد کيا گيا، جن کیخلاف پہلے بھی غير رجسٹرڈ اسنٹنٹ ڈالنے سے متعلق تحقيقات ہورہی ہيں۔ سماء

HEALTH

HEART

Doctor negligence

Tabool ads will show in this div