نیٹو نے اپنے دفاع میں 33 شہریوں کو ہلاک کردیا

Afghan National Army (ANA) soldiers keep watch at a checkpost in Logar province, Afghanistan February 16, 2016. NATO advisers want Afghan soldiers to spend less time manning checkpoints and more taking the fight to Taliban militants, a key tactical shift the coalition hopes will enable local forces to quell a rising insurgency. Picture taken February 16, 2016. REUTERS/Omar Sobhani  - RTX283UA

کابل: شالی اوقیانوس کی دفاعی تنظیم( نیٹو ) نے کہا ہے کہ امریکی فوج نے قندوز میں اپنادفاع کرتے ہوئے 33 شہریوں کو ہلاک کیا تھا جبکہ افغانستان میں بے گناہ اور معصوم شہریوں کی ہلاکتیں گزشتہ سال کے واقعہ کے بعد بڑی نمایاں ہوئیں ۔

جمعرات کو ذرائع ابلاغ نے نیٹو کے حوالہ سے بتایاکہ گذشتہ سال قندوز کے نواحی گاﺅں میں طالبان عسکریت پسندوں نے آبادی والے علاقہ کی عمارت سے امریکی اور افغان فوجیوں پر فائرنگ کی جس پر امریکی فوج کو بھی اپنے دفاع کے لئے فائرنگ کرنا پڑی جس سے خواتین اور بچوں سمیت 33 افغان شہری بھی ہلاک اور 27 زخمی ہو گئے تھے جبکہ طالبان کے ساتھ فائرنگ کے تبادلہ میں 2 امریکی فوجی اور 3 افغان کمانڈوز ہلاک ہو گئے تھے ۔

اس وقت قندوز کے شہریوں نے معصوم بچوں، خواتین اور شہریوں کی لاشوں کے ہمراہ سڑکوں پر بھر پور احتجاج کیا تھا تاہم اب نیٹو نے بتایا کہ گذشتہ سال 3 نومبر کو پیش آنے والے واقعہ کے دوران امر یکی فوج نے اپنے دفاع کےلئے گولی چلائی تھی۔

دریں اثناء افغانستان میں امریکی فوج کے سر براہ جنرل نکولسن نے بے گناہ اور معصوم شہریوں کی ہلاکتوں کو افسوسناک قرار دیا ہے ۔ سماء

KABUL

NATO

Tabool ads will show in this div