ماڈل ٹاؤن میں شہید خواتین کی بچیاں بھی انقلاب کیلئے پر عزم

اسٹاف رپورٹ

اسلام آباد : عوامی تحریک کے دھرنے میں جہاں 6 ماہ کی عمر سے 84 برس تک کے افراد شامل ہیں اُنہی میں 2 بچیاں بسمہ اور عائشہ بھی ہیں جن کی مائیں سانحہ ماڈل ٹاؤن کی نذر ہوگئیں، ننھی پریاں کہتی ہیں ممتا چھن جانے کے بعد اُنہیں جان کا خوف نہیں رہا اور وہ انصاف ملنے تک دھرنے سے نہیں اُٹھیں گی۔

بسمہ اور عائشہ کم عمر سہی لیکن ان کا حوصلہ بہت بلند ہے، وہ پُر عزم ہیں کہ ماں اور پھوپھو کے خون کا بدلہ ملنے تک وہ دھرنے سے نہیں اٹھیں گی، ننھی پریوں کا کہنا ہے کہ ماں کی شہادت کے بعد انہیں جان کا خوف نہیں رہا، ننھی بچیوں کے چہروں پر ماں کے بچھڑنے کا ملال تو ہے لیکن وہ اپنے قائد کے حکم پر دھرنا دیئے بیٹھی ہیں۔

عائشہ اور بسمہ ننھی عمر میں ماں سے بچھڑ گئیں لیکن وہ اپنی ماں کا خواب پورا کرنے کیلئے قائد انقلاب کے کارواں میں شریک ہیں۔ سماء

mac

پر

شہید

western

Tabool ads will show in this div