پاناما کیس؛اپنے الفاظ پر ندامت ہے،جسٹس آصف سعید کھوسہ

panama

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/01/SC-Side-Line-UPD-Isb-Pkg-09-01-1.mp4"][/video]

اسلام آباد :سپریم جسٹس میں پاناما کیس کی سماعت جاری ہے۔ پاکستان تحریک انصاف کے وکیل نعیم بخاری آج بھی  دلائل دے رہے ہیں۔ پاناما کیس کی سماعت جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کا پانچ رکنی لارجربینچ کررہا ہے۔ آج سماعت کا آغاز ہوا تو جسٹس آصف سعید کھوسہ نے گزشتہ روز آرٹیکل 62 اور 63 سے متعلق دی گئی آبزرویشن واپس لے لی۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ کا کہنا تھا کہ گزشتہ روزآرٹیکل62 اور 63 کے حوالےسےبات کی تھی۔ ارکان پارلیمنٹ سےمتعلق اپنے الفاظ واپس لیتا ہوں، مجھےایسےالفاظ نہیں کہنےچاہیےتھے۔ جسٹس آصف سعید کھوسہ نے مزید کہا کہ مجھےاپنےالفاظ پرندامت ہے۔

گزشتہ روز سماعت کے دوران جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ریمارکس دیے تھے کہ صادق اور امين کے قانون پر صحيح عمل درامد ہوا توسراج الحق کے سوا کوئی نہيں بچے گا ۔دلائل پر انحصار کی بات پر جسٹس کھوسہ نے کہا  قانون کی ایسی تشریح نہیں چاہتے کہ سبھی زد میں آ جائیں  ورنہ تو سراج الحق کے علاوہ کوئی بھی نہیں بچے گا۔

آج  پاناما کیس کی مجموعی طور پر پندرہویں اور نئے بینچ کی سربراہی میں پانچویں سماعت ہو رہی ہے، جس میں پی ٹی آئی وکیل نعیم بخاری، شریف خاندان کے لندن فلیٹس اورمریم نواز کے زیر کفالت ہونے کے دعویٰ سے متعلق دلائل جاری رکھے ہوئے ہیں۔ امکان ہے کہ آج ان کے دلائل مکمل ہوجائیں گے۔

SC Side Line UPD Isb Pkg 09-01

گزشتہ روز سپریم کورٹ نے پی ٹی آئی کے وکیل نعیم بخاری سے متعلق ریمارکس دیے تھے کہ انہوں نے 16 میں سے ایک بھی قانونی سوال کا جواب نہیں دیا۔ جسٹس شیخ عظمت سعید نے ریمارکس دیے تھے کہ بیل کو سینگوں سے پکڑنا ہے مگر پی ٹی آئی کے وکیل پانی میں مچھلیاں پکڑ رہے ہیں یا کچھ اور؟ قانونی سوال پوچھاجائے تو پتلی گلی سےنکل جاتے ہیں۔

واضح رہے کہ پاناما کیس میں پاکستان تحریک انصاف ، عوامی مسلم لیگ اور جماعت اسلامی سمیت دیگر نے وزیراعظم کو نااہل قرار دینے کیلئے سپریم کورٹ سے رجوع کیا ہے۔ پاناما لیکس میں وزیراعظم اور ان کے خاندان کے خلاف درخواستوں کی سماعت سابق چیف جسٹس، جسٹس انور ظہیرجمالی کی سربراہی میں پانچ رکنی لارجر بینچ کررہا تھا۔ 30 دسمبرکو جسٹس انور ظہیرجمالی کی ریٹائرمنٹ کے بعد چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں نیا 5 رکنی لارجر بینچ کیس کی سماعت کررہا ہے۔

چیف جسٹس ثاقب نثار پاناما کیس کی سماعت کرنے والے بینچ کا حصہ نہیں ہے۔ سماء

IMRAN KHAN

PM Nawaz Sharif

panama case

article 62 and 36

Tabool ads will show in this div