حکومتی اور پی اے ٹی مذاکرات: سانحہ ماڈل ٹاؤن کے ملزمان کی گرفتاری کا مطالبہ

اسلام آباد: حکومت اور پاکستان عوامی تحریک کے مذاکرات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی ۔ ایک طرف وفاقی اور پنجاب حکومت تحلیل کرنے کا مطالبہ کیا گیا ۔ دوسری جانب سانحہ ماڈل ٹاؤن کی ایف آئی آر درج کرنے اور انیس ملزمان کو سزا دینے پر رضا مندی ظاہر کی گئی ۔


حکومتی اور پاکستان عوامی تحریک کے مذاکرات دھرنے کی جگہ پر ایک ٹرک پر ہوئے ۔ احسن اقبال ، عبدالقادر بلوچ ، اعجاز الحق اور حیدرعباس رضوی نے عوامیی تحریک کے مطالبات سنے ۔

رحیق عباسی کہتے ہیں حکومت کی تحلیل اور سانحہ ماڈل ٹاؤن کے ملزمان کو سزا دینے کے مطالبات سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔

ذرائع کے مطابق، حکومتی کمیٹی نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی ایف آئی آر کے اندراج اور انیس نامزد ملزمان کے خلاف کارروائی پر رضامندی کا اظہار کیا ہے۔

احسن اقبال تو مذاکرات کے بعد بات کیے بغیر چل دیے لیکن عوامی تحریک کے رہ نماء خرم نواز گنڈہ پور کہتے ہیں حکومت نے مذاکرات میں سنجیدہ نہیں لگتی۔

خرم نواز تو پرامید نظر نہیں آئے۔ لیکن ثالثی میں شریک اعجاز الحق اُمید کا دیا روشن رکھے ہوئے ہیں۔  سماء

tariff

Tabool ads will show in this div