سال 2016 : وہ سیاسی بیان جنہوں نے ہلچل مچادی

nnns سال دوہزار سولہ رنگ ونور، رعنائیوں اور ہنگامہ خیزی کا سال رہا، کسی کے گھر خوشی چل کرآئی تو کوئی مشکل ترین دور سے گزارتاہم سیاسی طور پر دوہزار سولہ لاتعلقی اور علیحدگی کا سال رہا ۔

سال دوہزارسولہ کا سورج سیاسی سمندر میں نیا سیاسی طوفان لایا چند ایسے سیاسی بیان سامنے آئے جنہوں نے سیاست میں ہلچل مچادی۔

خواجہ آصف کی شیری مزاری پر تنقید

maxresdefault

قومی اسمبلی میں حکومت اور اپوزیشن اراکین کی گرما گرمی کے دوران خواجہ آصف نے اپوزیشن بنچوں سے سب سے اونچی آواز میں نعرے لگانے والی شیریں مزاری کو ’ٹریکٹر ٹرالی‘ کہتے ہوئے اسپیکر سے کہا کہ ’انہیں چپ کرائیں‘۔ اپنے خلاف نازیبا زبان استعمال کیے جانے پر شیریں مزاری آبدیدہ ہوگئیں تھیں۔

وفاقی وزیر خواجہ آصف کی جانب سے شیریں مزاری کو ٹریکٹر ٹرالی کہنے سے شروع ہونے والا جھگڑا قومی اسمبلی سے عدالت پہنچا۔

مصطفیٰ کمال کی انٹری

1111096-imagex-1464286392-489-640x480

کراچی کے سابق ناظم مصطفیٰ کمال کئی سالوں بعد پاکستان آئے اور ایک دھواں دھار پریس کانفرنس میں متحدہ قومی موومنٹ کے قائد پر سنگین نوعیت کے الزامات لگائے ساتھ ہی انہوں نے ایک نئی سیاسی جماعت بنانے کا بھی اعلان کر دیا۔

انیس قائم خانی اور مصطفی کمال نے علیحدگی ہی اختیار نہیں کی بلکہ پرانے قائد پر کچھ سنگین الزامات بھی لگائے ساتھ ہی انہوں نے نئی پارٹی بنانے کا اعلان کیا جس کا نام پاک سرزمین رکھا جس کے بعد کراچی کی سیاست نے نیا رخ اختیار کیا۔

کارٹون پر پابندی

PMFIG

پاکستان تحریک انصاف نے معروف جاپانی کارٹون سیریز ڈورے مون پر پابندی کے حوالے سے پنجاب اسمبلی میں قرار داد جمع کرادی۔

قرار داد میں پپیمرا پر زور دیا گیا تھا کہ کارٹون چینلز بند کیے جائیں اور خاص طور پر ڈورے مون کارٹون پر فوری پابندی لگائی جائے جس کے بعد سوشل میں ڈورے مون اور پی ٹی آئی زیر بحث بنی رہی۔

بانی ایم کیوایم کا بیان

MQM

ایم کیوایم کی جانب سے کراچی پریس کلب کے باہر گذشتہ کئی روز سے متحدہ قومی موومنٹ کا بھوک ہڑتالی کیمپ قائم تھا جہاں ایم کیو ایم کے بانی نے کیمپ کے شرکا سے ٹیلیفونک خطاب کیا، خطاب کے دوران کارکن جذباتی ہوگئے اور احتجاج کی اجازت مانگی۔

اس دوران کراچی پریس کلب اور اطراف میں مشتعل مظاہرین نے احتجاج شروع کردیا اور پریس کلب کے باہر مختلف چینلز کی ڈی ایس این جی وین پر پتھراؤ شروع کردیا جبکہ ایک ٹی وی چینل کے دفتر پر بھی حملہ کیا جس کے بعد کراچی کی سیاسی صورتحال بلکل تبدیل ہوگئی ۔

پھر اگست کے جاتے دنوں میں پینتیس سالوں کی رفاقت ٹوٹتے دیکھی گئی، لندن سے پاکستان کا ناطہ ٹوٹا اور ایم کیوایم میں لفظ پاکستان کا اضافہ ہوگیا۔

سماجی کارکن سے بدکلامی

jui_2

سینیٹر حافظ حمد اللہ نے ایک ٹی وی ٹاک شو کے دوران مبینہ طور پر سماجی کارکن ماروی سرمد سے بدکلامی کی جس کے بعد سوشل میڈیا پر اس ویڈیو کو شیئر کیا جانے لگا اور ایک تنازعہ کھڑا ہوگیا۔

صحافی ماروی سرمد نے جے یو آئی ف کے سینیٹر حافظ حمد اللہ کے خلاف مقدمہ درج کرنے کے لیے تھانہ کوہسار میں درخواست کردی تھی۔

مصطفی کمال کی گورنر پر تنقید

ibad

مصطفی کمال نے ایک پریس کانفرنس میں سابق گورنر سندھ عشرت العباد پر سنگین الزامات لگائے اور سانحہ بارہ مئی اور بلدیہ ٹاؤن واقعے کے ذمہ دار ٹہرایا۔

مصطفی کمال نے کہا کہ برطانوی شہریت رکھنے والا شخص گذشتہ چودہ سال سے گورنر سندھ جیسے حساس عہدے پر تغینات ہے اس بیان کے چودہ سالوں سے گورنر کے عہدے پر فائز ڈاکٹر عشرت العباد نے بھی خاموشی توڑدی اور مصطفی کمال پر تنقید کرتے ہوئے سامنے آئے۔

گورنر کا استعفیٰ

Isharat-ul-ibat (1)

سال کا اہم واقعہ ہے طویل عرصہ تک رہنے والا گورنر اپنا منصب طویل العمر کے سپرد کرتا بھی اسی سال دیکھا گیا۔ سماء

SHIREEN MAZARI

KHAWAJA ASIF

MUSTAFA KAMAL

doraemon

mqm founder

Tabool ads will show in this div