پنشن کی جدوجہد: ریلوے کے ریٹائرڈ ملازم کا انتقال؛ پانچ لاکھ روپے کا اعلان

اسٹاف رپورٹ
لاہور: لاہور میں ریلوے کا ریٹائرڈ ملازم پانچ ہزار روپے پنشن کے حصول کے ليے دو ماہ سے دھکے کھانے کے بعد بنک کے باہر باآلاخر زندگي کي بازي ہار گيا۔ وزارت ریلوے نے پانچ ہزار روپے پنشن تو بروقت دی نہیں لیکن متوفی کے خاندان کے لیے پانچ لاکھ روپے کی امداد کا اعلان ضرور کر دیا ۔۔

پوتے پوتیوں کوتحائف دینے کی خواہش لیے پنشن کا انتظار کرنے والا ریلوے کا ریٹائر ڈرائیور اڑسٹھ سالہ محمود خان منگل اور بدھ کی رات سے ریلوے کیرج کے باہر لگی قطار میں بیٹھا تھا۔ کہ صبح ساڑھے آٹھ بجے اسے دل کا دورہ پڑا اور وہ بے ہوش گيا۔ جسکے بعد وہاں موجود لوگوں نے اسے رکشے ميں ڈال کر ہسپتال پہنچانے کي کوشيش کي مگر وہ جانبر نہ ہو سکا۔۔

متوفی کے تین بچے ہیں جو اپنے باپ کی اس موت کا ذمہ دار حکومت ٹھہراتے ہیں۔۔

ریلوے کے مالی حالات کی بگڑتی صورتحال نے جہاں ریلوے کا پہیہ چلنا مشکل کردیا ہے وہیں اسکے ملازمین کو تنگدستی کے جان لیوا بھنور میں پھنسا دیا ہے۔۔

وفاقی وزیر ریلوے غلام احمد بلور نے محمود خان کے اہل خانہ کے لیے پانچ لاکھ روپے امداد کا اعلان کیا ہے اور اس کی موت کا ذمہ دار وزارت خزانہ کو ٹھہرایا ہے۔۔ وزارت ریلوے کی جانب سے اعلان کردہ یہ  پانچ لاکھ روپوں کی بجائے بروقت پنشن مل جاتی تو آج وہ زندہ ضرور ہوتا۔۔ ضیاء الرحمن سماء

کی

کے

کا

Gujranwala

tragic

secret

reports

azarenka

Tabool ads will show in this div