اللہ کےفضل سےآپ کی حکومت کوکچھ نہیں ہوگا،اعتزازا نے یقین دلادیا

ویب ایڈیٹر:


اسلام آباد : پاکستان پیپلزپارٹی کے سینیر رہنما اور سینیٹر اعتزاز احسن کا کہنا ہے کہ ماڈل ٹاؤن میں سترہ جون کو قیامت برپا کی گئی، طاہر القادری ایف آئی آر کیلئے چلاتے رہے، اعتزاز احسن کہتے ہیں باہر کھڑے لشکریوں کے الزمات میں صداقت ہے،جمہوریت کیلئے وزیراعظم ک غیرمشروط حمایت کا اعلان مگر یہ بھی فرما دیا کہ "وزیراعظم صاحب ہم آپ کیساتھ مجبوراً کھڑے ہیں،"۔

پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب میں سینیٹر اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ اپوزیشن جمہوریت اور آئین کے ساتھ کھڑی ہے، عمران اور قادری کا لشکر کامیاب ہوگیا تو آئین کی دھجیاں اڑ جائیں گی، طاہر القادری یہاں تک کیوں پہنچے، سانحہ ماڈل ٹاؤن کا مقدمہ درج کرلیا جاتا تو قادری یہاں نہیں ہوتے، کیوں پولیس حکومت کی بات نہیں مانتی، منہاج القرآن کی رکاوٹیں غیرقانونی تھیں تو کنٹینرز غیر قانونی نہیں؟ انہوں نے کہا کہ پولیس آپ کی بات نہیں مان رہی تھی کہ لکھ کر دیں، باہر کھڑے لشکریوں کے الزامات میں صداقت بھی ہے، کوئی شک نہیں انتخابات میں شدیدد ھاندلی ہوئی ہے، انتخابات میں دھاندلی تو ہوئی ہے، عمران کے کرپشن سے متعلق الزامات میں بھی صداقت ہے۔

اعتزاز نے طنز کے نشتر خوبصورت ادائیگی میں پرو کر حکومت کی جانب پھنکیں اور کہا کہ وزیراعظم صاحب آپ کے ساتھ پارلیمنٹ کھڑی ہے، اللہ کے فضل سے آپ کی حکومت کو کچھ نہیں ہوگا، وزیراعظم کا ہاتھ اپوزیشن نے تھام رکھا ہے، پولیس سے جو کام کرانا ہے، تحریری حکم جاری کریں، امتحان کے بعد وزیراعظم صاحب آپ کو بیٹھ کر سوچنا پڑے گا۔

اعتزاز نے کہا کہ "سوچنا ہوگا جب جب آپ کی حکومت گئی تو آپ کے دائیں بائیں کون تھا، وزیراعظم صاحب آپ کے وزرا کسی چیز کو سنجیدگی سے نہیں لیتے، حکومت کو اپنے رویوں میں بہت تبدیلی لانی پڑے گی"، وزیراعظم کو کوئی استعفیٰ دینے پر مجبورنہیں کرسکتا، انقلاب میں سچائی اور طاقت ہوتی ہے ملاوٹ نہیں۔

انقلاب کی اصل تشریح سے متعلق اعزاز نے معزز ایوان کو بتایا کہ انقلاب کے وقت ایک سوچ پورے ملک میں پھیلی ہوتی ہے، وکلا تحریک کے دوران سب کو ساتھ لیکر چلتے تھے، وکلا تحریک کے دوران پورے ملک میں دھرنا ہوا تھا، یہ کیسا انقلاب ہے جو اسلام آباد تک محدود ہے، وزیراعظم اور وزیر داخلہ نے ان کے ساتھ نرم سلوک کیا۔

اسمبلیوں کی تحلیل سے متعلق اعتزاز نے وضاحت دیتے ہوئے کہا کہ "ڈاکٹر مالک کی حکومت کے بارے میں یہ کیا کہیں گے، یہ اپنے وزیراعلیٰ سے تو استعفیٰ لے نہیں سکے، 1993میں آپ کہتے تھے میں استعفیٰ نہیں دونگا، 18اپریل1998کو آپ نے استعفیٰ دے دیا"۔

حکومت مخالف مشتعل دھرنوں اور احتجاج پر اعتزاز احسن نے سوال کرتے ہوئے کہا کہ "بتائیں10ڈاؤننگ کس سیارے پر ہے جس کے باہر مسلح جتھہ احتجاج کرتا ہے"، کس10ڈاؤننگ اسٹریٹ میں وزیراعظم کی گردن مروڑی گئی، بھٹو بننے کیلئے کنٹینر میں رہنے سے بات نہیں بنے گی۔

انہوں نے کہا کہ وزیر داخلہ کی گنتی درست نہیں ہوتی مگر آج احتیاط سے کام لیا گیا، وزیراعظم صاحب ہم آپ کیساتھ مجبوراً کھڑے ہیں، امید کرتے ہیں امتحان سے نکلنے کے بعد آپ کی حکومت کا نیا انداز ہوگا۔ سماء

کی

نے

Video

law

press

supporter

scholars

Tabool ads will show in this div