عمران فاروق قتل کیس،برطانیہ مجرموں کولینے کوتیار نہیں

nisar india sot 16-11 لندن : وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کا کہنا ہے کہ برطانیہ میں ایک پاکستانی کا بے گناہ قتل ہوا، اس کیس کو برطانیہ میں انجام تک پہنچنا چاہئے، تاہم برطانیہ مجرموں کو لینے کیلئے تیار نہیں ہے۔ لندن میں مختلف اہم ملاقاتوں کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کا کہنا تھا کہ عمران فاروق کیس اور بانی متحدہ کا معاملہ برطانوی حکام کے ساتھ ملاقاتوں میں اٹھایا ہے، لندن میں پاکستانی قتل ہوا،برطانیہ کو اس کیس کو انجام تک پہنچنا ہوگا، تاہم ساری باتیں میڈیا کو نہیں بتا سکتا، مگر یہ ضرور ہے کہ برطانیہ نے مجرموں کو لینے سے انکار کردیا ہے، برطانیہ کے ساتھ بانی متحدہ کا معاملہ بھی اٹھایا، ہم وہی فیصلہ کریں گے،جو پاکستان کے مفاد میں ہے۔ بھارتی جارحیت سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ برطانوی وزیراعظم کو بھارتی جارحیت سے بھی آگاہ کیا، جب کہ بھارت کے جارحانہ عزائم پر بھی کھل کر گفت گو کی، برطانوی وزیراعظم اور اعلیٰ حکام پاکستان کا دورہ کریں گے، 3روز میں برطانیہ کے حکام سے بہت مثبت ملاقاتیں ہوئیں، سیکیورٹی سمیت تمام معاملات پر بات کی گئی۔ بلوچستان بدامنی پر وزیر داخلہ نے کہا کہ شاہ نورانی حملہ ہوا، مگر میرا بطور وزیر داخلہ وہاں ہونا ضروری نہیں تھا، جتنی سہولیات مہیا کرسکتا تھا کیں، لاک ڈاؤن پر ان کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں کبھی کوئی اشتعال انگیز تقریر نہیں ہوئی، مجرموں کو سزا دینے کا عمل بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔ سائبر کرائم پر وزیر داخلہ نے کہا سائبر کرائم کو ختم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں، سائبر کرائم سے بہت زیادہ غلط فہمیاں پیدا کی جاتی ہیں۔ سماء

NISAR ALI KHAN

scotland yard

imran farooq

Indian Soldiers

cyber crime bill

Tabool ads will show in this div