کراچی: جنداللہ کے 5 دہشت گرد گرفتار

اسٹاف رپورٹ
کراچی: پولیس کے اسپشل انوسٹی گیشن یونٹ نے کالعدم تنظیم کے پانچ دہشت گردوں کو گرفتار کرکے اسلحہ  ہٹ لسٹ اور نقشے برآمد کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

گرفتار دہشت گرد سٹی کورٹ پر حملہ کرکے ساتھیوں کو چھڑانے، بینک ڈکیتوں، عاشورہ اور جناح اسپتال میں بم دھماکے سمیت دہشت گردی کی کئی وارداتوں میں ملوث ہیں۔

کراچی پولیس کے اسپشل انوسٹی گیشن یونٹ نے خفیہ اطلاع پر جنداللہ کے پانچ دہشت گردوں سیدکامران عرف وقار ، سالار محمد عرف خالد ، امجد خان عرف کارگل ، فرحان خان عرف حسین اور محمد منیر عرف عظیم کو گرفتار کرکے اسلحہ اور نقشے اور ہٹ لسٹ برآمد کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

 پولیس کا کہنا ہے کہ گرفتار دہشت گردوں نے انیس جون دوہزار دس کو سٹی کورٹ پر حملے کرکے اپنے چار ساتھیوں کو چھڑانے، جناح اسپتال میں چہلم کے روز بم دھماکہ کرنے، نجی اسپتال میں کیش وین سے 80 لاکھ لوٹنے، گلستان جوہر تھانے پر حملہ کرکے چھ اہلکاروں کو شہید کرنے، کورکمانڈر کراچی پر حملہ کرنے اور بینک ڈکیتیوں میں ملوث ہیں۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ جنداللہ کا قیام 2003 میں وریستان میں بنی۔ اس کا سربراہ حمزہ عرف جوفی عرف حاجی ممتاز تھا ۔ جس نے دہشت گردوں کی ٹریننگ کی ۔ پولیس حکام کا کہنا ہے کہ حمزہ جوفی اور جنداللہ کراچی کا امیر عارف عرف رضا اگست دوہزار گیارہ میں میزائل حملے میں مارے جاچکے ہیں۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ جنداللہ کراچی کا موجودہ امیر فصیح الرحمان عرف عدنان ہے جوسیمنٹ کے بلاک بم بنانے کا ماہر ہے ۔ پولیس دہشت گردوں کے دیگر ساتھیوں کی تلاش میں چھاپے ماررہی ہے۔ سماء

کے

burger

Azadi March

tests

jobs

Tabool ads will show in this div