میاں بیوی کو جلانے کے واقعے کیخلاف سول سوسائٹی اور سماجی تنظیموں کا احتجاج

اسٹاف رپورٹ

لاہور : قصور کے علاقے کوٹ رادھا کشن ميں مياں بيوی کو اينٹوں کے بھٹے ميں زندہ جلانے کیخلاف سول سوسائٹی اور سماجی تنظيموں نے لاہور ميں احتجاج کيا، انسانی حقوق کمشين نے انکشاف کيا ہے کہ مقتولين کو رقم کے تنازعے پر قتل کيا گيا اور بھٹہ مالک نے واقعے کو غلط رنگ ديا۔

کوٹ رادھا کشن ميں مياں بيوی کو زندہ جلانے کیخلاف سول سوسائٹی اور سماجی تنظيموں کے نمائندے لاہور پريس کلب کے سامنے اکٹھے ہوئے اور ملزمان کو سخت سزا دينے کیلئے آواز اٹھائی۔

مظاہرين نے الزام عائد کيا کہ مسلم ليگ نون کی حکومت اقليتوں کے تحفظ ميں ناکام رہی ہے، ماضی ميں ہونیوالے واقعات کا محاسبہ ہوتا تو کوٹ رادھا کشن کا واقعہ پيش نہ آتا۔

دوسری جانب انسانی حقوق کميشن کے حکام نے جائے وقوعہ کا دورہ کيا، انسانی حقوق کميشن کی رپورٹ کے مطابق مياں بيوی کا قتل رقم کے تنازع کا شاخسانہ ہے، مقتولين کی ضمانت پر بھٹہ مالک نے 2 مزدور خاندانوں کو پيشگی رقم دی، قرض لينے والے خاندان بھٹہ سے بھاگ گئے۔

کمیشن کے مطابق رقم واپس نہ ملنے پر بھٹہ مالک نے معاملے کو متنازع بنايا اور مشتعل ہجوم کو ساتھ ملاکر شمع اور شہزاد کو بھٹے کے شعلوں کی نذر کرديا، ادھر پوليس اس واقعے ميں 40 افراد کو گرفتار کرچکی ہے۔ سماء

updates

staff

transfer

port

interim

militias

Tabool ads will show in this div