دہشت گردی پاکستان اور افغانستان کا مشترکہ مسئلہ ہے، ممنون حسین

ویب ایڈیٹر

اسلام آباد : صدر ممنون حسین کا کہنا ہے کہ افغانستان میں پُرامن انتقال اقتدار ترقی کیلئے اہم پیشرفت ہے، دہشت گردی دونوں ممالک کا مشترکہ مسئلہ ہے، کسی ملک کیخلاف اپنی سرزمین استعمال کرنے کی اجازت نہیں دینگے، باہمی تجارت کو 5 بلین ڈالر تک بڑھانے کے خواہشمند ہیں۔

صدر مملکت ممنون حسین سے افغان ہم منصب اشرف غنی نے ملاقات کی، دونوں کے درمیان ون آن ون ملاقات 15 منٹ تک جاری رہی، اس سے قبل  دونوں ممالک کے وفود کی سطح پر مذاکرات بھی ہوئے۔

صدر ممنون حسین کا اس موقع پر کہنا تھا کہ پاکستان افغان صدر کے ویژن کی حمایت کرتا ہے، پڑوسی ملک میں پُرامن انتقال اقتدار ترقی کیلئے اہم پیشرفت ہے، پاکستان افغانستان میں سیاسی، اقتصادی تبدیلی کا حامی ہے، افغانستان سے خوشگوار تعلقات پاکستان کی پالیسی کی بنیاد ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان افغانستان میں داخلی مفاہمت کے عمل کا حامی ہے، دہشت گردی دونوں ممالک کا مشترکہ مسئلہ ہے، اس سے نمٹنے کیلئے ملکر کوششیں کرنا ہوں گی، کسی ملک کیخلاف اپنی سرزمین استعمال کرنے کی اجازت نہیں دینگے، آرمی چیف جنرل راحیل شریف کا دورہ کابل کامیاب رہا، امن کے قیام کیلئے دو طرفہ تعاون کا خیرمقدم کرتے ہیں۔

صدر مملکت کا کہنا ہے کہ تجارت اور اقتصادی شعبے میں تعاون دونوں ممالک کیلئے مفید ہوگا، باہمی تجارت کو 5 بلین ڈالر تک بڑھانے، توانائی، سماجی اور ہیومن ریسورس کے شعبوں میں تعاون کے خواہشمند ہیں۔ سماء

target killing

birthday

child marriage

female

goal

surrenders

transplant

Tabool ads will show in this div