انتخابی اصلاحات ذیلی کمیٹی کا اجلاس، الیکٹرانک ووٹنگ مشین کا عملی مظاہرہ

اسٹاف رپورٹ

اسلام آباد : انتخابی اصلاحات کمیٹی کی ذیلی کمیٹی کو الیکٹرانک ووٹنگ مشین کا عملی مظاہرہ دکھایا گیا، تاہم کمیٹی میں مشین سے متعلق کوئی فیصلہ نہ ہو سکا، کمیٹی کے کنوینر زاہد حامد کا کہنا ہے کہ چیف الیکشن کمیشنر کی تقرری تک الیکٹرانک ووٹنگ مشین پر کوئی فیصلہ نہیں کرسکتے۔

انتخابی اصلاحات کمیٹی کی ذیلی کمیٹی کا اجلاس زاہد حامد کی صدارت میں ہوا، اجلاس میں الیکشن کمیشن حکام کی جانب سے الیکٹرانک ووٹنگ مشین پر ووٹنگ کا عملی مظاہرہ کرکے دکھایا گیا۔

کنوینر زاہد حامد نے میڈیا سے بات چیت میں بتایا کہ کمیٹی الیکٹرانک ووٹنگ مشین پر کوئی حتمی فیصلہ نہیں کرسکی، الیکشن کمیشن حکام نے ووٹنگ مشن کی خامیوں کا کوئی حل نہیں بتایا، اس کا طریقہ کار فول پروف تو ہے مگر اس کی گارنٹی کوئی نہیں ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اس مشین کی لاگت 60 ہزار سے 70 ہزار روپے ہے، ملک بھر میں 275000 مشینیں منگوانی پڑیں گی جس پر کروڑوں روپے خرچ ہوں گے، اس لئے جلدی میں کوئی فیصلہ نہیں کرسکتے۔

زاہد حامد نے بتایا کہ اس حوالے سے الیکشن کمیشن اور تمام سیاسی جماعتوں سے تجاویز مانگ لیں، چیف الیکشن کمیشن کی تقرری تک اس بارے میں کوئی حتمی فیصلہ نہیں کرسکتے۔ سماء

jundullah

sharapova

species

steel

Tabool ads will show in this div