منصور اعجاز کے بیان پر آج جرح کی جائے گی

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ
اسلام آباد: میمو کمیشن کا نواں اجلاس آج اسلام آباد ہائی کورٹ میں ہو رہا ہے، منصور اعجاز کے بیان پر حیسن حقانی کے وکیل زاہد بخاری اور دیگر وکلاء جرح کرینگے ۔۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں میمو کمیشن کا نواں اجلاس آج اسلام آباد ہائی کورٹ میں ہو رہا  ہے ۔

میمو سکینڈل کے مرکزی کردار منصور اعجاز کا بیان گزشتہ روز مکمل ہو گیا تھا ۔ آج اجلاس میں حسین حقانی کے وکیل زاہد بخاری اور درخواست گزاروں کے وکلاء منصور اعجاز کے بیان پر جرح کرینگے ۔

منصور اعجاز نے گزشتہ روز اپنے بیان میں اعتراف کیا تھا کہ میمو انہوں نے خود تحریر کیا تھا ۔ تجاویز حسین حقانی نے دی تھیں ۔ انہوں نے کلمہ طیبہ پڑھ کر کہا کہ وہ مسلمان ہیں، منصور اعجاز نے بتایا کہ ان کے اور حسین حقانی کے درمیان بات چیت میں بیڈ بوائز کا لفظ جنرل کیانی اور جنرل پاشا کیلئے تھا ۔۔

حسین حقانی نے پیغام دیا کہ فوج کے مقابلے میں صدر آصف زرداری کا ساتھ دیا جائے تو امریکہ کے ساتھ تعلقات زیادہ دوستانہ ہو سکتے ہیں۔

9 مئی کو حقانی نے پیغام دیا کہ امریکہ کو اسامہ کی بیواؤں تک رسائی دے سکتے ہیں ۔ جس کے جواب میں حقانی کو میسج کیا کہ امریکہ کو آپ کا پیغام پہنچا دیا ہے، ردعمل خوش آئند ہے ۔ جیمز جونز نے تحریری  میمو پر اصرار کیا تو حقانی سے فون پر ڈرافٹ پر بات کی ۔ حقانی کا کہنا تھا کہ صدر زرداری نے  ''گو اہیڈ'' کہا ہے ۔۔

10 مئی کو جنرل جیمز جون کو بھجوائی جانے والی ای میل حیسن حقانی کو بھی بھجوائی ۔۔

گیارہ مئی کو جیمز جونز کی مختصر ای میل ملی کہ آپ کا میمو آگے پہنچا دیا ہے ۔۔

بارہ مئی کو حسین حقانی نے بتایا کہ امریکی صدر یا مائیک مولن نے پنڈی فون کر دیا ہے ۔۔ سماء

کی

کے

پر

آج

بیان

humanitarian

contest