ایم کیو ایم کے کارکن باؤ انور کے قتل کی مذمت کرتے ہیں،عمران خان

Nov 30, -0001

ویب ایڈیٹر :

 

اسلام آباد  : پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ حکومت نےہمارےخلاف کارروائیاں طے شدہ منصوےکےتحت کیں، ہم پر لاشوں کی سیاست کاالزام لگانیوالوں کوجمہوریت کی سمجھ نہیں، سیالکوٹ میں باؤ انور کے قتل سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں عمران خان کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم کے عہدے دار کا قتل اندوہناک واقعہ ہے، ہم اس کی شدید مذمت کرتے ہیں۔

 

اسلام آباد میں اپنی رہائش گا بنی گالہ پر میڈیا سے گفت گو میں عمران خان کا کہنا تھا فیصل آبادمیں گولیاں چلانےوالےکی فوٹیج سب نےدیکھی،پولیس نےفائرنگ کرنےوالےکوپکڑاہوا ہے،خدشہ ہےپولیس ملزم کومقابلےمیں ہلاک نہ کردے،پوری دنیانےدیکھافائرنگ پولیس کی موجودگی میں ہوئی،لاشوں کی سیاست کاالزام لگانیوالوں کوجمہوریت کی سمجھ نہیں، الزامات لگانےوالےدیانتدارنہیں،احتجاج آئینی حق ہے۔

 

عمران خان نے کہا کہ گوجرانوالہ اورجہلم میں بھی ہم پرگولیاں چلائی گئیں،حکومت نےہمارےخلاف کارروائیاں طے شدہ منصوےکےتحت کیں،پی ٹی آئی کارکنوں نےمزاحمت کی تو حکومت نےگولیاں چلادیں،تمام جماعتوں نےکہاانتخابات میں دھاندلی ہوئی،میاں افتخارحسین بتائیں دھاندلی ہوئی توہمیں مینڈیٹ کیسےمل گیا، مینڈیٹ تب ملتاہےجب الیکشن صاف وشفاف ہوں،اےاین پی مینڈیٹ تسلیم نہ کرےجوحلقہ کھلواناچاہےہم تیارہیں۔

 

این اے ایک سو بائیس سے متعلق عمران خان کا کہنا تھا کہ این اے122میں حکم امتناع کی کیاضرورت تھی،پی ٹی آئی دھاندلی کی تحقیقات اورمجرموں کوسزائیں چاہتی ہے،تحقیقات ہوئیں تو بات اوپر تک پہنچ جائے گی،مجرم پکڑے گئے تو آئندہ انتخابات شفاف ہوں گے، مجرموں کوسزادیےبغیرانتخابی اصلاحات بےفائدہ ہیں، حکومت نےمسلسل چوتھی بارہم پرگولیاں چلائیں،مذاکرات سے متعلق کپتان کا کہنا تھا کہ حکومت نےجوکیااصولاًہمیں مذاکرات نہیں کرنےچاہیئں،مذاکرات جہاں پرختم ہوئےتھےوہیں سےشروع ہوں گے،استعفیٰ کامطالبہ بھی واپس لےلیا،دھاندلی کی تحقیقات کرائیں، شہربندکرناپسندنہیں، ہمارامطالبہ تسلیم کرلیاجائے،ہم آگےبڑھےتوحکومت چلانامشکل ہوجائےگا،باؤ انور کے قتل پر پوچھے گئے سوال کے جواب میں عمران خان کا کہنا تھا کہ ایم کیوایم کےکارکن کےقتل کی سخت مذمت کرتاہوں،کارکنوں کی حفاظت حکومت کی ذمہ داری ہے۔

کی

کے

premier

hate

heroes

Tabool ads will show in this div