میں نہ مانوں ہار بلند اختر معاملہ:صدرنے چیف جسٹس کے تحفظات مسترد کردیئے

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ

اسلام آباد: صدر آصف علی زرداری بلند اختر رانا کو آڈیٹر جنرل مقرر کرنے کے فیصلے پر قائم ہیں۔ انہوں نے اس بارے میں چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کے خط کا تفصیلی جواب بھی دے دیا ہے۔



تفصیلی جواب میں کہا گیا ہے کہ بلند اختر رانا کے خلاف الزامات درست ثابت نہیں ہوئے۔


صدر مملکت آصف زرداری نے بلند اختر رانا پر لگائے گئے تمام الزامات کا تفصیل جواب دیتے ہوئے واضح کیا ہے کہ ماتحت خاتون کے خلاف جنسی طور پر ہراساں کرنے کے الزام سمیت دہرے پاسپورٹ، تین شناختی کارڈز رکھنے کے الزامات درست ثابت نہیں ہوئے۔

ان کے بارے میں محکمانہ تحقیقاتی رپورٹس موجود ہیں۔ ان میں بلند اختر رانا بے گناہ ثابت کئے گئے ہیں۔

دہری شہریت کے بارے میں بھی صدر کا موقف تھا کہ وہ پیدائشی پاکستانی ہیں اور دہری شہریت پاکستان کے قوانین کے تحت کوئی جرم نہیں اس لیے بلند اختر رانا آڈیٹر جنرل آف پاکستان کے عہدے کے لئے اہل ہیں۔

نامزد آڈیٹر جنرل، چیف جسٹس سے آج  اپنے عہدے کا حلف اٹھائيں گے۔

اس سے قبل چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے صدر آصف علی زرداری کو خط لکھا تھا جس میں بلند اختر رانا کو آڈیٹر جنرل مقرر کرنے پر مختلف حلقوں کے تحفظات سے آگاہ کیا گیا۔

چیف جسٹس نے بلند اختر رانا کے خلاف بدعنوانی اور نااہلی کے سات الزامات کی نشاندہی کی۔

ان میں خاتون کو ہراساں کرنے کے ساتھ ساتھ بلند اختر کی پاکستان اور کینیڈا کی دہری شہریت بغیر اجازت غیرملکی پاسپورٹ کا حصول، بیرون ملک رخصت اور گریڈ اکیس سے بائیس میں غیر قانونی ترقی کا بھی ذکر کیا۔ سماء

میں

کے

چیف

مسترد

offers

lawmakers

Tabool ads will show in this div