ووٹرز کی دھاندلی ۔۔۔۔۔

BILAWAL SOT 1800 NEW 16-078

آپ میرے موضوع کے الفاظ کو پڑھ کر سوچ رہے ہوں گے کہ اس کا کیا مطلب ہے؟، یہ الفاظ میرے ذہن میں آئے ہیں آزاد کشمیر کے حالیہ انتخابی نتائج کے بعد، جس میں اس بار انتخابی دھاندلی کی ہے ووٹرز نے اور بلاول بھٹو زرداری کو ان کے پہلے ہی سیاسی میچ میں ہرا دیا ہے۔

پاکستان کے زیرِ انتظام کشمیر میں رہنے والے لوگوں کے دل کسی نہ کسی طرح بلاول کے نانا ذوالفقار علی بھٹو کی محبت میں ضرور گرفتار رہتے ہیں، ذوالفقار علی بھٹو نے کشمیر پالیسی کیلئے شملہ معاہدہ سمیت جتنے بھی اقدامات اٹھائے اس وجہ سے وہ کشمیروں کے دلوں میں گھر کرگئے اور تقریباً ہر انتخابات میں پیپلز پارٹی کو اس کا سیاسی خراج بھی دیتے آئے ہیں۔

Bilawal Jalsa Arrival Muzafarabad 16-07

آزاد جموں اور کشمیر کے حالیہ انتخابی نتائج پیپلز پارٹی کیلئے لمحہ فکریہ ہیں، جنہوں نے بلاول بھٹو زرداری کو سیاسی میدان میں اتارا، ٹیلی ویژن کی اسکرینوں سے پتہ چلتا ہے کہ کشمیر کی انتخابی مہم میں بلاول نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا اور اپنی توپوں کا رخ نواز شریف کی جانب کئے رکھا، انتخابی مہم کے دوران بلاول بھٹو زرداری نے سب سے زیادہ جلسے کئے جنہیں ٹی وی اسکرینوں پر بھی نمایاں کوریج ملتی رہی۔

لگتا ہے کسی نے بلاول کو یہ نہیں بتایا کہ لوگ کب تک ان کی جماعت کو اس کے نانا کی قربانیوں کا خراج دیتے رہیں گے، اگر 2013ء کے عام انتخابات سے لے کر ضمنی اتتخابات، گلگت بلتستان انتخابات اور اب آزاد کشمیر انتخابات میں سیاسی جماعتوں کی کارکردگی دیکھیں تو سب میں پیپلز پارٹی کی انتخابی کارکردگی کا گراف ثابت قدمی سے نیچے کی جانب سفر کررہا ہے۔ عوامی حلقوں کے مطابق پیپلز پارٹی کو اس زوال تک پہنچانے کیلئے موجودہ پارٹی قیادت نے سخت محنت کی ہے۔

Mirpur Bilawal Pkg 21-06

ٹی وی اسکرینوں کے ہی مطابق آزاد کشمیر میں دوسری بڑی انتخابی مہم پاکستان تحریک انصاف کی رہی ہے، جس میں عمران خان نے پانامہ لیکس اور نواز شریف کو کرپٹ ترین ٹولے کا سربراہ قرار دیکر ووٹروں کا خون خوب گرمایا، نتیجہ یہ نکلا کہ آزاد کشمیر کے سابق صدر اور وزیراعظم بیرسٹر سلطان محمود جنہوں نے تحریک انصاف کے پلیٹ فارم سے انتخابات میں حصہ لیا، پچیس برسوں میں پہلی بار شکست کھا گئے۔

سیاسی جماعتوں کے مطالبے پر کشمیر میں انتخابات پاک فوج کی زیر نگرانی کرائے گئے جس میں ٹرن آؤٹ تقریباً 65 فیصد رہا اور لوگوں نے گرمی اور حبس کے باوجود جوش و خروش سے ووٹ ڈالے، شفافیت کا عالم یہ رہا کہ کشمیر کی عدالتِ عظمیٰ کے ایک جج کو قومی شناختی کارڈ نہ دکھانے پر میرپور کے ایک پولنگ اسٹیشن پر ووٹ ڈالنے کی اجازت نہیں ملی۔

Ik Speech Khari Shareef 19-07

ن لیگ کے سربراہ اپنی بیماری کے باعث انتخابی مہم میں خود تو حصہ نہیں لے سکے البتہ ان کے وزراء اس میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے رہے، نواز شریف کو انتخابی مہم کے دوران 'مودی کا یار' بھی قرار دیا گیا، اسی مودی کے یار کی جماعت آزاد کشمیر اسمبلی کی 41 میں سے 31 نشستیں لینے میں کامیاب رہی ہے۔

آزاد کشمیر نتائج کے بعد تحریک انصاف کو سوچنا ہوگا کہ کیوں کشمیریوں نے تبدیلی کی سیاست کو مسترد کر ڈالا جبکہ پیپلز پارٹی کیلئے بھی لمحہ فکریہ ہے کہ کیوں ان کی جماعت کا حقیقی وارث اپنی پہلی ہی سیاسی اننگز ہار گیا؟۔

ماضی کے آزاد کشمیر انتخابات پر نظر ڈالی جائے تو معلوم پڑتا ہے کہ مرکز یعنی اسلام آباد میں جس بھی سیاسی جماعت کی حکومت ہو قطع تعلق اس سے پیپلز پارٹی خاطر خواہ کامیابیاں سمیٹتی رہی ہے، دھاندلی تو یقینناً اس بار بھی ہوئی ہے مگر اس بار دھاندلی خود ووٹرز نے کی ہے۔

IMRAN KHAN

bilawal bhutto zardari

Zaulfiqar Ali Bhutto

Azad Kashmir Election

Tabool ads will show in this div