پشاورمیں روزے داروں کی خون کی ہولی،7شہید،متعدد زخمی

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹر
پشاور: پپشاور میں صبح نکلتے ہی تین دھماکوں نے شہر کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ آج الصبح دہشت گردی کا افسوس ناک واقعہ پیش آیا۔ جہاں انسانیت کے دشمنوں نے تین کارروائیوں میں روزے داروں کے خون سے ہولی کھیلی۔  پہلے واقعہ میں پولیس کی گاڑی کو ریموٹ کنٹرول بم سے نشانہ بنایا گیا ،جس میں پانچ اہل کار اور آنکھوں میں مستقبل کے سپنے سجائے اسکول جانے والا ایک معصوم بچہ بھی جان کی بازی ہار گیا ۔ ابھی پہلے دھماکے کی امدادی کارروائیاں جاری تھیں کہ دہشت گرد خاتون خود کش حملہ آور نے حملہ کر دیا۔ جس میں حملہ آور خاتون سمیت ایک اور خاتون جاں بحق ہوگئیں


تفصیلات کے مطابق آج صبح ہوتے ہی سرکلر روڈ پر پولیس وین کو نشانہ بنایا گیا۔  جس میں بچے سمیت 5 اہل کار شہید ہو گئے۔ حملے میں 15 سے زائد افراد زخمی بھی ہوئے۔ پولیس وین کو ریمورٹ کنٹرول بم سے نشانہ بنایا گیا۔

دھماکا شدید نوعیت کا تھا جس سے قریبی عمارتوں کے شیشے ٹوٹ گئے۔ دھماکے کے بعد قانون نافذ کرنے والے اداروں نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور لوگوں کی آمدو رفت مکمل طور پر بند کر دی۔

بم ڈسپوزل ماہرین کے مطابق دھماکا ریموٹ کنٹرول کے ذریعے کیا گیا اور اس میں‌ بال بیرنگ بھی استعمال کئے گئے. دھماکے کے فوراً بعد امدادی کارروائیاں شروع کر دی گئیں اور زخمیوں کو قریبی اسپتالوں میں منتقل کر دیا گیا. بعض زخمیوں کی حالت تشویش ناک ہونے کی وجہ سے ہلاکتوں میں اضافے کاخدشہ ہے۔

بم ڈسپوزل اسکواڈ کے مطابق بم سات سے آٹھ کلو گرام وزنی تھا اور ہاتھ ریڑھی پر رکھا گیا تھا۔

پولیس وین پر حملے کے کچھ دیر بعد لاہور گیٹ پر دو مزید دھماکے ہوئے جس میں خود کش حملہ آور خاتون نے پولیس چیک پوسٹ کے قریب خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔

خود کش حملہ آور نے پہلے دستی بم سے حملہ کیا اورپھر خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔ دھماکے میں 8 افراد زخمی ہوئے۔ جن کو لیڈی ریڈنگ اسپتال منتقل کردیاگیا۔ سماء

زخمی

کی

exit

submits

Tabool ads will show in this div