انجم عقیل کی تیسرے مقدمے میں بھی ضمانت،لیگی رہنما کی رہائی کا امکان

اسٹاف رپورٹر

راول پنڈی: مسلم لیگ نواز کے رکن قومی اسمبلی انجم عقیل خان کی تیسرے مقدمے میں بھی ضمانت ہو گئی ہے۔ انجم عقیل کو  آج جیل سے رہا کر دیا جائے گیا۔

انجم عقیل خان کے خلاف نیشنل پولیس فاؤنڈیشن اراضی اسکينڈل کيس میں عبوری ضمانت اور تھانہ شالیمار میں درج پلاٹ فراڈ کیس میں درخواست ضمانت کی سماعتا سپیشل جج سینٹرل راول پنڈی کی عدالت میں ہوئی۔

انجم عقیل کے وکلا نے عدالت کے استفسار پر بتایا کہ  انجم عقیل خان دل کی تکلیف میں مبتلا ہونے کے باعث عدالت میں پیش نہیں ہو سکے۔ وکلا نے عدلت کو بتایا کہ  تھانہ شالیمار کے مقدمے میں مدعی شباہت علی کے ساتھ معاملات طے پا چکے ہیں لہذا اُنکی ضمانت منظور کر لی جائے۔

عدالت نے دونوں جانب سے دلائل سننے کے بعد انجم عقیل خان  کی ضمانت منظور کرلی اور دو لاکھ روپے کے مچلکے جمع کرانے کی ہدایت۔

نیشنل پولیس فاؤنڈیشن اراضی اسکینڈل میں انجم عقیل خان اور سابق ڈی آئی جی سمیت لئیق احمد خان اور عبدالحنان کی عبوری ضمانت میں سات ستمبر تک کی توسیع کردی گئی ہے۔ واضح رہے کہ  فرار کیس میں انجم عقیل خان سمیت دیگر اکتیس ملزمان کی  پہلے ہی انسداد دہشت گردی کی عدالت سے ضمانتيں منظور ہو چکی ہيں۔

آج انجم عقیل خان کی جانب سے دو لاکھ روپے کے مچلکے جمع کرا نے کی صورت میں ان کی اڈیالہ جیل راول پنڈی سے رہائی عمل میں آ جائے گی۔سماء

میں

کی

کا

dialogues

kolkata

Tabool ads will show in this div