ترکی میں ناکام بغاوت،درجنوں فوجی برطرف،میڈیاپرکریک ڈاؤن

TURKEY SECURITY MILITARY PKG 28-07 [video width="640" height="360" mp4="http://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/07/TURKEY-SECURITY-MILITARY-PKG-28-07.mp4"][/video]  

انقرا: ترکی میں باغیوں کے خلاف کريک ڈاؤن جاری ہے۔اب تک سترہ سو فوجی ملازمت سے برطرف کردئیے گئے ہیں۔ گولن کے حامیوں کے تیس ٹی وی چینلز، پینتالیس اخبارات سمیت ایک سو تیس ميڈيا ہاؤسزکي بندش کا نوٹیفیکیشن جاری کردیا گیا ہے۔

ترکی میں طیب اردوان کی حکومت کے خلاف پندرہ جولائی کی فوجی بغاوت کے بعد اب تک برطرف کئے جانے والے فوجیوں کی تعداد سترہ سو ہوگئی۔ ان اہلکاروں میں  ڈیڑھ سو فوجی جنرل  بھی شامل ہیں جبکہ گولن کے حامی تقریباً ساٹھ ہزار سرکاری اہلکاروں کے خلاف تحقیقات جاری ہیں جن میں اعلیٰ عدالتوں کے جج  تعلیمی اداروں کے سربراہان اساتذہ ، فوجی اور پولیس اہلکار شامل ہیں۔

 بدھ کو جاری کردہ گزٹ ںوٹیفیکیشن کے تحت گولن تحریک کے حامی تیس ٹی وی چینلز، پینتالیس اخبارات، پندرہ میگزین  اور انتیس جرائد کو بند کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ حکومت نے سینتالیس صحافیوں کی نظر بندی کے احکامات بھی دیئے ہیں۔

 ادھر فوجی بغاوت کے خلاف احتجاج کرنے والے اے کے پارٹی کے حامی بارہویں روز بھی سڑکوں پر موجود رہے۔  سماء

world news

failed coup

Golan

Tabool ads will show in this div