کشمیریوں سےرشتہ کیا؟

Kashmiri Muslim women wail as they watch the funeral procession of suspected rebels, at Barhama, 40 kilometers (25 miles) south of Srinagar, Indian controlled Kashmir, Monday, Oct. 5, 2015. At least four Indian army soldiers and three suspected rebels were killed in three separated gun battles in Indian-controlled Kashmir, police said on Monday. (AP Photo/Mukhtar Khan)
Kashmiri Muslim women wail as they watch the funeral procession of suspected rebels, at Barhama, 40 kilometers (25 miles) south of Srinagar, Indian controlled Kashmir, Monday, Oct. 5, 2015. At least four Indian army soldiers and three suspected rebels were killed in three separated gun battles in Indian-controlled Kashmir, police said on Monday. (AP Photo/Mukhtar Khan)

Kashmir

مقبوضہ کشمیر میں آگ و خون کی بھارتی ہولی جاری ہے، بربریت کی انتہاسے نبردآزما نہتے کشمیریوں کا غم ہے کہ کم ہونے کا نام ہی نہیں لے رہا۔ وادی میں تشددکی تازہ لہر تیسرے ہفتے میں داخل ہو چکی ہے۔ اب تک 60 سے زائد شہری شہید اور سیکڑوں زخمی ہو چکے ہیں۔ غاصب افواج کے کرفیو نے وہاں نظام زندگی بری طرح سے متاثرکیا ہواہے۔ لوگ کھانے پینے کی اشیاء اور دوائیوں کی شدید قلت سے دوچار ہیں۔

مگر ''تو تیر آزما ہم جگر آزمائیں''۔ جذبات کاایک سیلِ رواں ہے کہ جومدمقابل ہر چیز کو بہا لے جانا چاہتا ہے ، جس کے آگے بند باندھنا اب بھارت سرکارکے بس کاروگ نہیں۔ بھارت مخالف مظاہروں ، ریلیوں اورکامیاب ہڑتالوں سے کشمیریوں نے اس بار بھی ہتھیار نہ ڈالنے کا عزم ظاہر کیا ہے اور ایک نئی قوت اورنئی توانائی سے اپنی قسمت آپ بدلنے کا فیصلہ کیا ہے۔

kashmirs

اہل کشمیر نے کل بھی یہ جدوجہد اپنے بل بوتے پر کی تھی اور آج بھی یہ جنگ اپنے زورِ بازو پر لڑ رہے ہیں، چاہے پاکستان ساتھ دے نہ دے، اسلام آباد نئی دلی تعلقات دوستانہ ہوں یا کشیدہ، پاک بھارت رومانس میں نرمی آئے یا گرمی، بے ثمرمذاکرات کا اونٹ کسی کروٹ بیٹھے یا نہ بیٹھے، نواز مودی دوستی گہری ہو کہ نہ ہو اور امریکابہادر سے کوئی اشارہ ملے نہ ملے ، یہ قافلہء سخت جاں اسی شانِ بے نیازی سے رواں دواں رہے گا۔ ہر آنے والا دن ان کے جذبوں کو جلا بخشتا ہے اورہر گرنے والی لاش ان کے حوصلوں کو مہمیز عطا کرتی ہے ۔

مگر افسوس کہ ا س اہم موڑ پر آج ہمارے سیاستدانوں اور خصوصاً حکمرانوں کی بے حسی دیکھنے سے تعلق رکھتی ہے۔ ہم جو کشمیریوں کے پشتی بان بنے پھرتے ہیں اس اہم مسئلے پر ایک دوسرے کی ٹانگیں کھینچنے اور بال نوچنے کے علاوہ کچھ بھی نہیں کر رہے۔ سیاستدانوں کو آزاد کشمیر کے انتخابات تو یاد ہیں مگر’ کشمیر کاز‘ سے کوئی دلچسپی نہیں۔ 'یو مِ الحاقِ پاکستان'  اورحکومتِ پاکستان کا 'یومِ سیاہ' بھی یوں ہی گزر گئے مگر کسی کے کان پر جوں تک نہ رینگی، کوئی پارٹی ایک بڑی ریلی تک نہ نکال سکی۔ پاکستان کا دفتر خارجہ اوروزیر اعظم صرف وہی 60 سال پرانے بیان داغنے میں مصروف ہیں، شاید یہ سمجھتے ہوئے کہ یہ الفاظ نہیں بلکہ افواج ہیں جو ہم سرحد پاردشمن سے لڑنے کے لئے بھیج رہے ہیں۔ بقول سلیم احمد ''غنیمِ وقت کے حملے کا مجھ کو خوف رہتا ہے، میں کاغذ کے سپاہی کاٹ کر لشکر بناتا ہوں''۔

Kashmiri Muslim women wail as they watch the funeral procession of suspected rebels, at Barhama, 40 kilometers (25 miles) south of Srinagar, Indian controlled Kashmir, Monday, Oct. 5, 2015. At least four Indian army soldiers and three suspected rebels were killed in three separated gun battles in Indian-controlled Kashmir, police said on Monday. (AP Photo/Mukhtar Khan)

کرتوت ایسے ہیں تبھی تومیاں صاحب کے خلاف اپنوں اور غیروں کے سارے لشکر صفِ بستہ ہیں۔ بلاول بھٹو کہتے کہ میاں اور مودی کی دوستی کشمیر کے لئے خطرہ ہے۔دلچسپ بات یہ کہ دونوں جماعتوں کی حکومت ماضی میں کشمیر کے لئے کچھ بھی نہیں کر سکی۔ عمران خان بھی نوازشریف کے نرم موقف پر نالاں ہیں۔ ادھرکشمیر کمیٹی کی سیٹ پر دس سال سے براجمان مولانا فضل الرحمٰن کی خاموشی اور غیر فعالیت بھی ایک سوالیہ نشان ہے۔ ان سے کوئی پوچھے کہ آج تک کس انٹرنیشنل فورم پر جاکر موصوف نے یہ انسانی المیہ اجاگر کیا ہے ؟ کروڑوں روپے کے فنڈز لے کر ٹھنڈے ایئر کنڈیشن ہالوں میں سیمینار سجانے سے اگر کشمیر کا پاکستان سے الحاق ہونا ہوتا تو اب تک ہو چکا ہوتا۔

الغرض ہماری اس مسئلے سے بے گانگی اپنی نظیر آپ ہے۔ ہم یہ سمجھنے سے قاصر ہیں کہ پاکستان اور اہلِ کشمیر کے لیے مسئلہ کشمیر کا مفہوم کتنا گہرا اور کتنا تاریخی ہے؟ پاکستان اور کشمیر کا آپس میں کیسا رشتہ ہے؟ ایک پاکستانی اور ایک کشمیری کے باہمی تعلق کی آخر کیا بنیاد ہو ہو سکتی ہے؟ اور یہ کہ کیا کشمیر کے حصول کی جدوجہد دراصل پاکستان کے بقا کی جنگ ہے؟ آئیے ایک نظر ان سوالوں پر بھی ڈال لیتے ہیں۔

KASHMIR JAL RAHA HY NEW PKG 20-07

کشمیر پاکستان اور اہلِ کشمیر کے لیے ایک ''مذہبی مسئلہ'' ہے۔ اس لیے کہ پاکستان کی بنیاد دو قومی نظریہ ہے اور اہلِ کشمیر کو دو قومی نظریے کی بنیاد پر فیصلہ کرنا تھا کہ وہ پاکستان کے ساتھ الحاق کرنا چاہتے ہیں یا بھارت کے ساتھ۔ پاکستان اگر کشمیرکو فراموش کرے گا یا اس پر سودے بازی کرے گا تو وہ اپنی بنیاد پرکلہاڑی چلائے گا۔

کشمیر سے ایک تعلق تاریخی ہے کیونکہ بانی ء پاکستان نے کشمیر کو پاکستان کی شہہ رگ کہا تھا مگر حکمران اس تاریخی بنیاد کو بھی فراموش کئے بیٹھے ہیں۔ بھارت کی پاکستان کے خلاف ''آبی جارحیت'' نے قائداعظم کی کشمیر سے متعلق بصیرت پر مہر تصدیق ثبت کردی ہے لیکن ہمارے حکمرانوں کی آنکھیں نہیں کھل رہیں ۔دنیا میں اب جنگیں پانی کے مسئلے پر لگنے والی ہیں، کیا ہم نے ملک کی آبی ضروریات کے لئے کشمیر کو سامنے رکھتے ہوئے کوئی منصوبہ بندی کی ہے؟

کشمیر سے ایک تعلق دفاعی بھی ہے۔ ساٹھ سال سے کشمیر کا خطہ اور یہ محاذ ہمارے تصورِ دفاع کی ایک تزویراتی بنیاد ہے، سوچنے کی بات ہے کہ کیا ہم اس پالیسی کو پھلانگ سکتے ہیں؟

کشمیر کا ایک حوالہ قانونی بھی ہے، یعنی اقوام متحدہ کی قراردادیں اور ان کے ذریعے اس مسئلے کا حل، لیکن قراردادیں تو دور کی بات، فوجی اور سول حکمران اس حقیقی مسئلے کا کوئی ‘‘مصنوعی’’ حل بھی نہیں نکال سکے ہیں۔ کیاان قراردادوں پر عملدرآمد کے لئے ہم نے عالمی قوتوں پر کوئی دباؤ ڈالا ہے، یا ڈال سکتے ہیں؟

A Kashmiri Muslim demonstrator throws stones towards Indian police during a protest in Srinagar

ہمارے کشمیر سے تعلق کی ایک اخلاقی اور جزباتی جہت بھی ہے۔ کیونکہ کشمیر قربانیوں کی داستان ہے۔ یہاں چھ لاکھ سے زائد لوگ آزادی کی جدوجہد میں شہید ہوئے، ہزاروں لوگ ہمیشہ ہمیشہ کے لیے لاپتا ہوگئے۔ ہزاروں خواتین کی عصمت دری ہوئی، ہزاروں لوگ کال کوٹھڑیوں میں دائمی اذیت کی نذر ہوگئے۔ ہزاروں گھروں کے معاشی سہارے چھن گئے۔ کیا اہل کشمیر سے اپنے تعلق کی اس ’’جذباتی بنیاد‘‘ کوہم یا ہمارے حکمران ختم کر سکتے ہیں؟ یاپھر پاکستانی عوام نے اس باب کواپنے اجتماعی حافظے سے محوکر دیا ؟

آزمائش کی بھٹیوں میں جلنے والے پوچھتے ہیں کہ ابھی اور کتنا جلنا باقی ہے۔ '' آگ ہے اولادِ ابراہیم ہے ، نمرود ہے، شاید کسی کو پھر کسی کا امتحاں مقصود ہے''۔

UNITED NATION

Plebiscite

Aggression

Suppression

Tabool ads will show in this div