ایان علی نے وارنٹ گرفتاری سپریم کورٹ میں چیلنج کردیے

Ayyan Ali Lhr Zubair PKG 17-09

اسلام آباد:ماڈل ایان علی نے کسٹم انسپکٹر قتل کیس میں جاری وارنٹ گرفتاری سپریم کورٹ میں چیلنج کردیے۔ کرنسی اسمگلنگ کیس میں ایان علی کے وکیل لطیف کھوسہ کے ذریعے دائر کردہ درخواست میں سیکرٹری داخلہ، ایس ایچ او تھانہ وارث خان اور مجسٹریٹ راولپنڈی کو فریق بنایا گیا ہے۔ درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ کسٹم انسپکٹراعجاز چوہدری کے قتل کے وقت ایان علی جیل میں تھیں۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ ایان علی مقدمے میں براہ راست نامزد بھی نہیں۔ شریف برادران ماڈل ٹاؤن مقدمہ میں نامزد ہونے کے باوجود آج تک گرفتار نہیں ہوئے۔ بیوروکریٹس ایان علی کے خلاف اوچھے ہتھکنڈے استعمال کر رہے ہیں۔

مزید پڑھیے: ماڈل ایان علی کے وارنٹ گرفتاری جاری

درخواست میں سپریم کورٹ سے ایان علی کے وارنٹ گرفتاری کالعدم قرار دینے کی استدعا کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ انہیں جان بوجھ کر کرنسی اسمگلنگ کیس کی پیروی سے روکا جا رہا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روزعلاقہ مجسٹریٹ نے ایان علی کے وارنٹ گرفتاری جاری کرتے ہوئے انہیں کسٹم انسپکٹر قتل کیس میں ایک ماہ کے اندر گرفتارکرکےپیش کرنے کا حکم دیا تھا۔ مقتول کسٹم انسپکٹراعجاز کی بیوہ نے ایان علی کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کروایا تھا۔ سماء

انٹرٹینمنٹ

currency scandal

mega corruption case

Tabool ads will show in this div