چترال میں سیلاب نے تباہی مچا دی،31 افراد جاں بحق

chitral 2

[video width="640" height="360" mp4="http://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/07/Flood-In-Chitral-Isb-Pkg-03-07.mp4"][/video]

چترال:  پاک افغان سرحد کے قریب بارشوں سے چترال میں تباہی مچ گئی۔ پی ڈی ایم اے ( پاکستان ڈیزاسٹرز منیجمنٹ اتھارٹی) نے جنوبی چترال کے علاقےآرسون میں سیلاب سے 31 افراد کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کر دی۔ پی ڈی ایم اے کے مطابق 7افرادکی لاشيں افغانستان کےحدودسےمل گئی ہیں جبکہ ريلےميں بہنےوالے24افرادتاحال لاپتہ ہیں۔

پی ڈی ایم اے حکام کے مطابق سیلابی ریلے سے ایک ہی گھرکے 6 افراد بھی جاں بحق ہوئے ، جاں بحق افراد میں 2 خواتین اور 3 بچے بھی شامل ہیں۔ سيلاب سے6گھرتباہ ہوئے، ایک مسجد شہیدہوئی جبکہ دیگر املاک کو بھی نقصان پہنچا۔

chitral

چترال کے علاقہ آرسون میں سیلاب کے باعث نمازیوں اورفوجیوں سمیت اب تک 31 افراد جاں بحق ہونے کے باعث علاقے میں ہنگامی حالت نافذ کر دی گئی۔طوفانی بارش کے بعد آنے والے سیلابی ریلے میں بہہ کردرجنوں افراد بہہ گئے۔مسجد میں تراویح پڑھتے 10نمازیوں اورایک گھر میں موجود بچوں سمیت تمام افراد کوبڑا ریلا بہا لے گیا۔

مزید پڑھیے: چترال سیلاب؛عمران خان کی صوبائی حکومت کو متحرک ہونے کی ہدایت

chitral5

علاقے میں پاک فوج پاک فوج، چترال اسکاؤٹس، بارڈر پولیس اور چترال پولیس امدادی کارروائیوں میں مصروف ہیں۔

ایمرجنسی سینٹرنےجاں بحق افرادکےنام جاری کردیے۔ جاں بحق افرادمیں عبدالرزاق، ذاکراللہ، نورمحمد، حلیم اللہ، منیب اللہ، نورمحمدخان، عبدالسلام، ضیاء الحق،عبدالطیف شامل ہیں۔ عثمان نامی شخص، اس کی اہلیہ اور4 بچےبھی جاں بحق افرادمیں شامل ہیں۔

chitral3

سیلاب کے باعث کئی دوسرے گھر بھی متاثر ہوئے۔ ضلع ناظم مغفرت شاہ نے سماء سے گفتگو میں بتایا کہ راستے بند ہونے کے باعث امدادی کارروائیوں میں شدید دشواری کا سامنا ہے۔ راستے بند ہیں جبکہ پیدل چلنا بھی دشوار ہے۔

مزید پڑھیے: چترال میں تباہی کی ذمہ دار وفاق اور صوبائی حکومت ہے

ڈپٹی کمشنر چترال اسامہ وڑائچ کے مطابق صورتحال سے نمٹنے کے لیے ہنگامی حالت نافذ کر دی گئی ہے۔متاثرہ علاقے دور افتادہ ہونے کے باعث امدادی سرگرمیوں میں مشکلات کا سامنا ہے لیکن  ہیں مقامی انتظامیہ تمام تر وسائل بروئے کار لا رہی ہے۔ متاثرین کو محفوظ مقامات پر منتقل کرنے کے علاوہ اشیائے خورونوش بھی فراہم کی جارہی ہیں۔

chitral4

واضح رہے کہ گزشتہ سال بھی چترال میں بارشوں کے بعد آنے والے سیلاب سے کئی افراد جاں بحق ہوئے تھے۔ سیلاب سے املاک کو بھی شدید نقصان پہنچا تھا، کئی سڑکیں اور پل پانی میں بہہ گئے تھے۔ سماء

HEAVY RAIN

KPK govt

rain damages

Tabool ads will show in this div