لاہور: آنکھ کے اشارے سے چلنے والی وہيل چيئرکا تجربہ

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ
لاہور: لاہور ميں دسويں جماعت کے طالب علم نے آنکھ کے اشارے سے چلنے والي وہيل چيئرکے ماڈل کا کامياب تجربہ کرليا ہے۔

پاک ترک سکول کے ہونہار طالب علم مغیث خان کی کاوش اوران کے اساتذہ کی راہنمائی کا ثمر ہے کہ کمپیوٹر انجینئرنگ کا اک شاہکار وجود میں آ رہا ہے،،، مغیث معذور افراد کیلئے آنکھوں کے اشارے سے چلنے والی وہيل چئیر تیار کر رہے ہيں،

رنگوں اور آوازوں کی مدد سے حرکت کرانے کے مراحل سے ہوتے ہوئے مغیث کی ریسرچ اب اس سطح تک پہنچ چکی ہے کہ آنھ کی پتلی کی پوزیشن دیکھ کر وہ گاڑی کو حرکت دے سکتا ہے،،،

مغيث کي يہ تخليق چارماہ کي محنت کا ثمر ہے اور اب مغیث کے ترک استاد پرعزم ہیں کہ جلد ہی وہ اس منصوبے کو حتمی شکل دے سکیں گے اوریہ وہيل چيئر معذور افراد کے کام آ سکے گی،،،

مغیث کے مطابق اگر پی آئی سی چپ اور ضروری تکنیکی امداد ہو سکے تو  جدید ٹیکنالوجی سے آراستہ وہيل چئير سستے داموں مارکیٹ میں میسر ہو گی،،،

مغیث کا کہنا ہے کہ اس کی ریسرچ فقط ویل چئر تک محدود نہیں رہے گی بلکہ وہ مستقبل میں نئی راہیں تلاش کرے گا۔

لاہور

کے

سے

sana

Tabool ads will show in this div