پاکستانیوں کی جائیدادکی تفصیلات نہیں بتاسکتے،دبئی حکام نےکہہ دیا

FBR Briefing Isb Pkg 06-06

[video width="640" height="360" mp4="http://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/06/FBR-Briefing-Isb-Pkg-06-06.mp4"][/video]

دبئی:  متحدہ عرب امارات نےحکومت پاکستان کو پاکستانی شہریوں کی جائیدادوں کی تفصیلات فراہم کرنے سے انکارکردیا ہے۔ حکومت نے آف شور کمپنیوں سے متعلق علیٰحدہ پیکج لانے کا اعلان کردیا ۔

پاکستانی شہریوں کی دبئی میں کتنی جائیدادیں ہیں؟؟  ایف بی آر کی چھان پھٹک کی کوششیں گئیں بے کارہوگئیں۔ دبئی حکام نے حکومت پاکستان کو معلومات دینے سے انکارکردیا ہے۔ اسلام آباد میں نئے بجٹ پر تکنیکی بریفنگ کے دوران ایف بی آر حکام نے بتایا کہ بیرون ملک کمپنیاں یا جائیدادیں رکھنے والوں سے متعلق پیکج پر کام جاری ہے تاہم کسی کو ایمنسٹی دینے کی تجویز زیرغور نہیں۔

ایف بی آر حکام نے بتایا کہ مجموعی آبادی کا صرف صفر اعشاریہ سات فیصد لوگ ٹیکس گوشوارے جمع کراتے ہیں۔ تاہم ساڑھے پانچ سے چھ کروڑ موبائل صارفین بلواسطہ طور پر ٹیکس ادا کرتے ہیں۔  تمام لوگ انکم ٹیکس دینا شروع کر دیں تو حکومتی آمدنی میں کھربوں روپے اضافہ ہو جائے گا۔

حکام کے مطابق نئے مالی سال کے بجٹ میں 115 ارب روپے کے براہ راست ٹیکس عائد کئے گئے ہیں جس سے بلاواسطہ ٹیکسوں کا تناسب بڑھ جائے گا۔  سماء

Property

pakistani in UAE

Tabool ads will show in this div