پاکستانی آرکیٹیکٹ یاسمین لاری کیلئے جاپان کا ثقافتی ایوارڈ

yasmeen-lari اسلام آباد : پاکستانی آرکیٹیکٹ یاسمین لاری جاپان کا ثقافتی ایوارڈ حاصل کرنے والی پہلی خاتون بن گئیں، یاسمین لاری کو یہ ایوارڈ ثقافتی شعبے میں نمایاں خدمات پر دیا گیا ہے۔ سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر جاری مختلف اشخاص کی ٹوئٹ کے مطابق پاکستانی آرکیٹیکٹ یاسمین لاری کو جاپان کے اعلیٰ ثقافتی ایوارڈ فوکوکا ایشای کلچر 2016 سے نوازا گیا ہے۔ جاپان کی پرائز کمیٹی کی جانب سے یاسمین لاری کو اس ایوارڈ کیلئے نامزد کیا گیا تھا، یہ ایوارڈ ثقافتی شعبے میں گراں قدر خدمات کے نتیجے میں دیا جاتا ہے۔ یہ ایوارڈ جاپانی شہر کے نام سے منسوب ہے، جسے جاپان کی ثقافتی مارکیٹ تصور کیا جاتا ہے۔ اس ایوارڈ کا اجراء 1990 سے شروع ہوا، جس کے بعد ہر سال اس شعبے میں نمایاں کام کرنے والوں کو اس ایوارڈ سے نوازا جاتا ہے، یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ یاسمین لاری کو پاکستان کی پہلی آرکیٹیکٹ ہونے کا اعزاز حاصل ہے، انہوں نے پینتیس برس تک آئی ٹی فیلڈ میں خدمات سر انجام دیں اور بعد ازاں یونیسکو کے ساتھ کام کیا۔ دیگر نمایاں منصوبوں کے علاوہ کراچی قائد اعظم میوزیم کی تزئین و آرائش بھی یاسمین لاری ہی نے کی۔ یاسمین لاری پاکستان کی پہلی خاتون آرکیٹکٹ ہیں ، بعد ازاں انہوں نے ایک غیر سرکاری تنظیم دی ہیریٹیج فاﺅنڈیشن (The Heritage Foundation) قائم کی جس کے تحت انجینئرز اورآر کیٹیکٹس پر مشتمل ان کی ٹیم نے 2010ءکے بدترین سیلاب کے بعد تعمیر نو اور بحالی کے لیے نئی تعمیراتی اشیا کا تجربہ شروع کیا۔ اس سیلاب میں 2,000 افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے جبکہ ہزاروں لوگ بے گھر ہوگئے۔ یاسمین لاری کا کہنا ہے کہ ان کے تعمیر شدہ یہ گھر سالوں تک سیلاب کا مقابلہ کرسکتے ہیں۔  سماء

architecture

buildings

Tabool ads will show in this div