افغانستان میں دیرپا امن کیلئے پاکستان کردار ادا کررہا ہے

May 20, 2016

Pakistan's new foreign policy chief Aziz speaks during a news conference in Kabul

اسلام آباد: مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے کہا ہے کہ افغانستان میں دیرپا امن کیلئے پاکستان سہولت کار کا کردار ادا کر رہا ہے، دونوں ممالک مل کر دراندازی پر قابو پا سکتے ہیں، اسلئے اعتماد سازی کیلئے کام کیا جائے۔

اسلام آباد میں پاک افغان باہمی مذاکرات کی بیٹھک میں مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے واضح کیا کہ علاقائی ممالک کو منسلک کرنے کا خواب افغانستان میں قیام امن کے بغیر پورا نہیں ہو سکتا۔ مشیر خارجہ نے پرامن اور خوشحال افغانستان ہی پاکستان کے مفاد میں قرار دیا اور دونوں ممالک کے مابین اعتماد کے فقدان کا خاتمے کی ضرورت پر زور دیا

مزید پڑھیں؛ افغان امن کےمسائل میں پاکستان کوموردالزام نہیں ٹھہرایا جائے

سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ جولائی دوہزار پندرہ میں طالبان لیڈر ملا عمر کی ہلاکت کی خبر سامنے آنے کے بعد افغانستان میں امن کےلئے ہونے والے مذاکرات تعطل کا شکار ہوئے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ کبھی کبھار افغانستان کی جانب سے آنے والے منفی بیانات دو طرفہ تعلقات میں رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔

مشیر خارجہ نے کہا کہ عمومی طور پر خیال کیا جاتا ہے کہ پاکستان کا طالبان پر کنٹرول ہے، لیکن حقیقت میں یہ تاثر ٹھیک نہیں۔ انہوں نے کہا دونوں ممالک کے درمیان پیدا ہونے والی بےاعتمادی افغانستان میں امن و استحکام کی کوششوں کو متاثر کرتی ہے۔

مزید پڑھیں؛ پُرامن افغانستان پاکستان سمیت خطے بہترین مفاد میں ہے، سرتاج عزیز

انہوں نے کہا افغان مہاجرین کی واپسی کا معاملہ ایک بڑا چیلنج ہے جسکے لیے موثر اقدامات کیے جارہے ہیں۔ تقریبا تین لاکھ سے زائد افغان مہاجرین اسوقت پاکستان میں قیام پذیر ہیں۔

مذاکرات میں افغان سفیر حضرت عمر زخیل وال نے پاک افغان تعلقات میں اتار چڑھاؤ کو مہاجرین کے مسئلے سے جوڑا اور دونوں ممالک کو اس مسئلے پر سیاست نہ کرنے کا مشورہ دیا۔ سماء

sartaj aziz

Afghan Ambassador

Afghan Refugees

peace in Afghanistan