پاک امریکا ورکنگ گروپ کےاسٹرٹیجک استحکام،عدم پھیلاؤ پرمذاکرات

May 17, 2016
Aizaz-Ahmad-Chaudhry اسلام آباد : امریکا نے نیوکلیئر سپلائرز گروپ اور دیگر کثیر الجہتی ایکسپورٹ کنٹرول حکومتوں کے ساتھ اسٹرٹیجک ٹریڈ کنٹرول ہم آہنگ کرنے کیلئے پاکستان کی نمایاں کوششوں کو تسلیم کرلیا، پاکستان نے اپنے مسلسل مؤقف کا اعادہ کیا کہ وہ خطہ میں نیوکلیئر ٹیسٹنگ میں پہل نہیں کرے گا، دونوں ملکوں نے نمایاں تنازعات کو پرامن طریقہ سے حل کرنے پر زور دیا۔ ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق پاک امریکا سلامتی، اسٹرٹیجک استحکام اور عدم پھیلاﺅ ورکنگ گروپ کے آٹھویں مرحلے کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا، اجلاس میں سیکریٹری خارجہ اعزاز احمد چوہدری نے پاکستان، جب کہ امریکی نائب سیکریٹری خارجہ برائے آرمز کنٹرول و بین الاقوامی سیکیورٹی روز گوٹی موئیلر نے امریکا کی نمائندگی کی۔ اجلاس میں امریکا نے نیوکلیئر سپلائرز گروپ اور دیگر کثیر الجہتی ایکسپورٹ کنٹرول حکومتوں کے ساتھ اسٹرٹیجک ٹریڈ کنٹرول ہم آہنگ کرنے کیلئے پاکستان کی نمایاں کوششوں کو تسلیم کرلیا، جب کہ پاکستان نے اپنے مسلسل مؤقف کا اعادہ کیا ہے کہ وہ خطہ میں نیوکلیئر ٹیسٹنگ میں پہل نہیں کرے گا، دونوں ملکوں نے نمایاں تنازعات کو پرامن طریقہ سے حل کرنے پر زور دیا ہے۔ پاکستانی وفد نے اس بھرپور اعتماد کا اظہار کیا کہ پاکستان ایکسپورٹ کنٹرول رجیم خصوصاً نیوکلیئر سپلائر گروپ (این ایس جی) اور میزائل ٹیکنالوجی کنٹرول رجیم کا مکمل رکن بننے کی بھرپور صلاحیت رکھتا ہے، پاکستان نے سماجی و اقتصادی ضرورت کے تحت نیوکلیئر ٹیکنالوجی کے پرامن استعمال تک رسائی پر زور دیا۔ اجلاس میں پاکستان نے صحت، زراعت اور واٹر سیکٹرز میں نیوکلیئر سائنس کے پرامن استعمال میں امریکا کے ساتھ تعاون میں دلچسپی ظاہر کی، امریکا نے بھی پاکستان کے ساتھ نیوکلیئر سائنسی تعاون میں دلچسپی کا اظہار کیا، پاکستان نے اپنے اس مؤقف کا اعادہ کیا کہ وہ خطہ میں نیوکلیئر ٹیسٹنگ میں پہل نہیں کرے گا۔  سماء

relationship

PAK US

Missile Technology Control Regime

Tabool ads will show in this div