پاکستان نے آئی ایم ایف کا ایک اور مطالبہ مان لیا

نئے احکامات پرعمل درآمد کیلئے اسٹیٹ بینک کا سرکلر جاری

بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے ایک اور مطالبے پر پیشرفت سامنے آگئی ہے۔

اسٹیٹ بینک نے سینکڑوں درآمدی اشیاء پر عائد کیش مارجن کی شرط واپس لے لی۔ نئے احکامات پرعمل درآمد کیلئے اسٹیٹ بینک کا سرکلرجاری کردیا گیا۔

مرکزی بینک کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق 31 مارچ سے سینکڑوں درآمدی اشیاء پر 100 فیصد کیش مارجن جمع نہیں کرانا پڑے گا۔

معاشی ماہرین کے مطابق کیش مارجن کی شرط ہٹانے سے درآمدات اور ڈالرکی طلب بڑھے گی جبکہ پاکستان کے پاس صرف ایک ماہ کی درآمدات کے برابر زرمبادلہ ہے۔

دوسری جانب ملکی زرمبادلہ کے ذخائر 10 ارب ڈالر سے تجاوز کر گئے۔اعلامیے کے مطابق اسٹیٹ بینک کے ڈالر ذخائر28 کروڑ ڈالر بڑھ کر4 ارب 60 کروڑ ڈالر ہوگئے۔

مرکزی بینک کے اعداد شمار کے مطابق بینکوں کے پاس کھاتے داروں کے 5 ارب 54 کروڑ ڈالر کے ڈیپازٹس ہیں جبکہ پاکستان کے ذخائر کا مجموعی مالی حجم 10 ارب 14کروڑ ڈالر ہے۔

STATE BANK OF PAKISTAN (SBP)

PAKISTAN IMF DAILOGUE

Import duty

Cash Margin Requirement

تبولا

Tabool ads will show in this div

تبولا

Tabool ads will show in this div