کراچی:2 ماہ میں ڈکیتوں کی گولیاں 26 افراد کی جان لے گئیں

3 ماہ میں ملزمان454 گاڑیاں، 10 ہزار 223موٹرسائیکلیں لے اڑے

کراچی میں دو ماہ میں ڈکیتوں کی گولیاں 26 افراد کی جان لے گئیں۔

کراچی میں رواں سال کے جنوری ، فروری اور مارچ کی 15 تاریخ کے ڈیٹا کے مطابق 4 سو 54 شہری گاڑیوں ، 10 ہزار 2 سو 23 شہری موٹرسائیکلوں سے محروم ہوئے جبکہ 5 ہزار 6 سو 34 شہریوں سے موبائل فون چھین لئے گئے۔

سرکاری اعداد وشمار کے مطابق سال 2022 میں 2 ہزار 2 سو 66 شہریوں سے گاڑیاں چوری اور چھین لی گئیں۔ اسی سال میں 56 ہزار 8 سو 71 شہری سے ان کی موٹرسائیکلیں چھینی گئیں یا چوری ہوئیں۔

رواں سال سب سے زیادہ وارداتیں ضلع سینٹرل نارتھ کراچی ، ناظم آباد ، نارتھ ناظم آباد اور فیڈرل بی ایریا کے علاقوں میں رپورٹ ہوئیں۔ دوسرے نمبر پر ضلع سٹی یعنٰی گارڈن ، نبی بخش ، رنچھوڑ لائیں اور کھارادر کے علاقوں میں ہوئیں۔۔ جرائم کی شرح میں تیسرے نمبر پر ضلع ایسٹ یعنی گلشن اقبال ، گلستان جوہر ، بہادرآباد ، پی ای سی ایچ ایس کے علاقے ہیں۔

کچے میں پولیس کی کارروائی،9 مغوی بحفاظت بازیاب

شہر قائد میں ڈکیت صرف شہریوں کو انکے مال سے ہی محروم نہیں کررہے بلکہ ان کی جان بھی لے رہے ہیں۔ رواں سال کے 75 دنوں میں اب تک 26 شہریوں کو ڈکیتی مزاحمت پر قتل کیا جاچکا ہے۔ گزشتہ سال ڈکیتی مزاحمت پر شہریوں کے مارے جانے کا 8 سالہ ریکارڈ ٹوٹا تھا۔ 108 شہریوں کو مختلف علاقوں میں قتل کیا گیا تھا۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ کراچی کے کسی بھی علاقے میں کھڑے ہوکر آپ یہ نہیں کہہ سکتے کہ آپ ڈکیتوں سے محفوظ سے وہ جس گلی جس چوک پر چاہیے کارروائی کرتے ہیں اور باآسانی فرار بھی ہوجاتے ہیں۔

robbery

street crimes

Karachi Police

Tabool ads will show in this div