امریکا میں خاتون سے جبری مشقت کا جرم؛ ساس اور 2 دیوروں کو 12 سال تک کی سزائیں

عدالت کا متاثرہ خاتون کو اجرت کی مد میں 2 لاکھ 50 ہزار ڈالرز ادا کرنے کا بھی حکم

امریکا کی ایک عدالت نے ایک پاکستانی خاتون سے جبری مشقت کرانے کا جرم ثابت ہونے پر اس کی ساس اور 2 دیوروں کو 12 سال تک کی سزائیں سنادیں۔

امریکی ریاست ورجینیا میں ایک وفاقی عدالت نے ایک خاتون سے 12 سال تک جبری گھریلو مشقت کرانے کے جرم میں اس کی 80 سالہ ساس 12سال اور 55 اور 48 سالہ 2 دیوروں کو بالترتیب 5 اور 10 سال کی سزائیں سنائی ہیں۔

مجرموں کی شناخت زاہدہ امان، محمد نعمان چوہدری اور محمد ریحان چوہدری کے نام سے ظاہر کی گئی ہے۔

عدالت نے زاہدہ امان اور محمد ریحان چوہدری کو متاثرہ خاتون کو 2 لاکھ 50 ہزار ڈالر بطور اجرتے ادا کرنے اور دیگر معاملات کی مد مد میں مالی تلافی کا بھی حکم دیا ہے۔

مقدمے کی تفصیلات کے مطابق زاہدہ امان نے 2002 میں متاثرہ خاتون کی اپنے بیٹے سے شادی کرائی تھی، شادی کے کچھ عرصے بعد خاتون کا شوہر گھر چھوڑ کر کہیں چلا گیا اور اس کے سسرال والوں نے خاتون سے جبری مشقت کرانی شروع کردی۔

عدالتی شواہد کے مطابق مجرموں سے متاثرہ خاتون کے سفری دستاویزات قبضے میں لے کر دھمکی دی کہ اگر اس نے منہ کھولا تو بچے چھین کر اسے پاکستان واپس بھجوادیں گے۔

AMERICA

PAKISTANI IN AMERICA

Tabool ads will show in this div