خلابازوں کی خلا میں سال کی پہلی چہل قدمی

بین الاقوامی خلائی اسٹیشن کے باہر 2 خلابازوں سے 7 گھنٹے اور 21 منٹ خلا میں گزارے

بین الاقوامی خلائی اسٹیشن کے باہر 2 خلا بازوں نے رواں سال خلا میں پہلی چہل قدمی کی ہے۔

2 خلابازوں نے جمعہ کو 2023 کی پہلی اسپیس واک کا آغاز کیا جب وہ بین الاقوامی خلائی اسٹیشن کے پاور جنریشن سسٹم کو اپ گریڈ کرنے کے لیے کام کر رہے تھے۔

امریکی خلائی ادارے ’’ناسا‘‘ (NASA)کی خلاباز نکول مان (Nicole Mann) اور جاپان کے سرکاری خلائی ادارے جاپان ایرو اسپیس ایکسپلوریشن ایجنسی (the Japan Aerospace Exploration Agency) سے تعلق رکھنے والے خلاباز کویچی وکاٹا ( Koichi Wakata) نے رواں سال (2023) کے دوران خلا میں پہلی چہل قدمی کا اعزاز اپنے نام کیا۔

ناسا کے مطابق کویچی وکاٹا اور نکول مان نے بین الاقوامی خلائی اسٹیشن (ISS)کے پاور جنریشن سسٹم کو اپ گریڈ کرنے کے لیے کام کے دوران 7 گھنٹے اور 21 منٹ خلا میں گزارے۔

اس دوران دونوں ماہرین نے بین الاقوامی خلائی اسٹیشن کے بالاکل آخری حصہ میں بجلی کی فراہمی سے متعلق ایک پرزہ (kit) نصب کیا۔

nasa

iss

Nicole Mann

Koichi Wakata

Tabool ads will show in this div